وزیراعظم نوازشریف اور وزیراعلیٰ شہبازشریف کا کامیاب دورہ برطانیہ

خصوصی رپورٹ
برطانیہ کا شمار پاکستان کے دوست ممالک میں ہوتا ہے جس نے مختلف شعبوں کی ترقی میں اہم کردار ادا کیا۔ برطانیہ کا پاکستان کو ترقی کے لئے ہمیشہ تعاون حاصل رہا ہے اور تعلیم‘ صحت سمیت دیگر شعبوں میں یہ تعاون قابل قدر ہے۔ موجودہ حکومت کو اقتدار میں آتے ہی متعدد چیلنجز کا سامنا کرنا پڑا جن میں دہشت گردی اور توانائی کا بحران سرفہرست ہیں۔ توانائی کے بحران نے ملک کی معیشت پر گہرے منفی اثرات مرتب کئے ہیں جس سے نہ صرف عام آدمی متاثر ہوا ہے بلکہ صنعت و حرفت پر بھی گہرے منفی اثرات مرتب ہوئے ہیں۔ توانائی کے بغیر کسی بھی ملک کی ترقی کا تصور بھی نہیں کیا جا سکتا۔ توانائی کے بحران نے ملکی ترقی  کا پہیہ روک دیا ۔ اربوں روپے کے برآمدی آرڈر منسوخ ہو گئے ہیں۔ مزدور کا چولہا ٹھنڈا ہو گیا ہے  کارخانوں کی چمنیوں سے دھواں نکلنا بند ہو گیا۔ حکومت نے اس چیلنج سے نمٹنے کے لئے ہنگامی بنیادوں پر اقدامات کئے اور مختلف متبادل ذرائع سے بجلی کے حصول کو اپنی اولین ترجیح بنایا۔ آج توانائی کے حصول کے لئے مختلف منصوبوں کو حتمی شکل دے دی گئی ۔ پنجاب میںبہاولپور کے مقام پر قائد اعظم سولر پارک‘ مظفر گڑھ‘ تونسہ بیراج سمیت کوئلے سے بجلی کے حصول کے منصوبوں کو تیزرفتاری سے شروع کرنے کے لئے انتظامات کر لئے گئے ہیں۔ نندی پور کا منصوبہ بھی  رواں ماہ کے آخر میں اپنی پیداوار شروع کر دے گا۔ حکومت نے جہاں توانائی کے بحران پر قابو پانے کے لئے چین سے تعاون حاصل کیا‘ وہاں دورہ برطانیہ کے دوران بھی توانائی سمیت تعلیم‘ صحت ‘ انسداد دہشت گردی سمیت مختلف شعبوں میں تعاون کے حوالے سے مفید بات چیت ہوئی۔ پنجاب میں مختلف شعبوں کی ترقی میں برطانیہ کا تعاون قابل ستائش ہے۔ برطانوی ادارہ برائے بین الاقوامی ترقی (ڈیفڈ) تعلیم کے فروغ‘ اصلاحات اور سکلز ڈویلپمنٹ پروگرام کے میدان میں حکومت پنجاب سے بھرپور تعاون کر رہا ہے۔ وزیراعظم محمد نوازشریف اور وزیراعلیٰ شہبازشریف نے مختلف شعبوں میں تعاون کے حوالے سے برطانیہ کا چار روزہ دورہ کیا۔ بلوچستان کے وزیراعلیٰ ڈاکٹر عبدالمالک بھی ان کے ہمراہ تھے۔ وزیراعلیٰ محمد شہبازشریف کو برطانوی حکومت نے دورے کی بطور خاص دعوت دی تھی۔
حکومت برطانیہ کی خصوصی دعوت پر وزیراعظم پاکستان محمد نوازشریف کے ہمراہ لندن پہنچنے پر دورے کے پہلے روز میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے وزیراعلیٰ پنجاب محمد شہبازشریف نے کہا  کہ برطانیہ کی وزیر برائے بین الاقوامی ترقی اور عالمی اداروں کی جانب سے سکل ڈویلپمنٹ، تعلیم اور دیگر شعبوں میں حکومت پنجاب کے اقدامات کی تحسین صرف پنجاب کے لئے نہیں بلکہ پورے پاکستان کے لئے فخر کا باعث ہے-پنجاب حکومت اپنے تجربات دوسرے صوبوں کے سا تھ شیئر کرنے کے لئے ہمہ وقت تیار ہے- پاکستان کے عوام نے ہم پر جو ذمہ داری ڈالی ہے اسے دیانتداری، محنت اور لگن کے سا تھ پورا کرنے کی بھر پور کوشش کر رہے ہیںیہی وجہ ہے کہ عالمی ادارے پنجاب حکومت کی کارکردگی کو سراہتے ہیں-گڈ گورننس، ٹرانسپیرنسی اور خود احتسابی ہماری طرز حکومت کے بنیادی ستون ہیں-وزیراعلیٰ محمد شہبازشریف نے کہاکہ صوبے میں فروغ تعلیم کے لئے اٹھائے گئے انقلابی اقدامات کے مثبت نتائج برآمد ہورہے ہیں پنجاب ایجوکیشنل انڈوومنٹ فنڈ کے ذریعے مالی مشکلات سے دوچار ہونہار طلبا و طالبات معروف تعلیمی اداروں میں اپنی علمی پیاس بجھا رہے ہیں۔ پنجاب ایجوکیشن فائونڈیشن کی ووچر سکیم کے تحت بھی غریب خاندانوں کے لاکھوں بچے تعلیم حاصل کر رہے ہیں۔ اب پنجاب میںکوئی بچہ تعلیم سے محروم نہیں رہے گا۔ ذہین طلبا و طالبات کی حوصلہ افزائی کے لئے پوزیشن ہولڈرز کو بیرون ممالک کے تعلیمی اداروں کے مطالعاتی دوروں پر بھجوایا جاتا ہے  اس پروگرام میں نہ صرف پنجاب بلکہ سندھ، خیبر پختونخواہ ، بلوچستان ،آزاد کشمیر اور پاکستان کے دیگر علاقوں کے طلبا و طالبات کو بھی شامل کیا گیا ہے جس سے قومی یکجہتی کو فروغ حاصل ہو رہا ہے۔ سکل ڈویلپمنٹ پروگرام بھی کامیابی سے جاری ہے اور اس پروگرام کے تحت اب تک ہزاروں بچوں اور بچیوں کو مختلف فنون کی تربیت دی جا چکی ہے۔ وزیراعلیٰ نے بتایا کہ صوبائی دارالحکومت میں سٹیٹ آف دی آرٹ نالج پارک بھی بنایا جا رہے جس میں مختلف یونیورسٹیوں کے کیمپس قائم کئے جائیں گے اور اس سلسلے میں عنقریب لاہور میں معروف غیر ملکی تعلیمی اداروں کے نمائندوں کی کانفرنس کاانعقاد کیا جا رہا ہے-بعد ازاں وزیراعلیٰ محمد شہبازشریف نے لندن میں پاکستانی کمیونٹی کے وفود سے ملاقات کے دوران گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ دنیا بھر کے مختلف ممالک میں مقیم پاکستانی انجینئرنگ، طب ،بینکنگ اور دیگر شعبوں میں کام کر رہے ہیں بیرون ممالک میں مقیم پاکستانی مختلف شعبوں میں حاصل کئے گئے اپنے تجربات پاکستانی بھائیوں سے شیئر کریں- اس وقت دنیا کی نظریں پاکستان پر لگی ہیں۔ اوورسیز پاکستانی اپنے عمل سے ثابت کریں کہ ہم ایک امن پسند، روادار اور خود دار قوم ہیں۔  اوورسیز پاکستانیوں کی پراپرٹی قبضہ گروپوں سے واگزار کرائیںگے ۔ پاکستانی وفود نے لاہور میں اوورسیز پاکستانیز کنونشن کے انعقاد پر وزیراعلیٰ پنجاب شہبازشریف کا شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا کہ شہبازشریف نے کنونشن کا انعقاد کر کے ہمارے دل جیت لئے ہیں۔ انہوںنے  اپنے عمل سے ثابت کیا  کہ وہ بیرون ممالک میں مقیم پاکستانیوں سے دلی لگائو اورہمدردی رکھتے ہیں۔ شہبازشریف جس طرح صوبے کے عوام کی خدمت کر رہے ہیں وہ لائق تحسین ہے۔
وزیراعظم محمد نوازشریف سے لندن میں ملاقات کے دوران برطانوی وزیراعظم ڈیوڈ کیمرون نے وزیراعلیٰ محمد شہبازشریف کی قائدانہ صلاحیتوں کی تعریف کرتے ہوئے کہا کہ صوبے کی ترقی اور ادارہ برائے بین الاقوامی ترقی (ڈیفڈ) سے تعاون کے لئے پنجاب حکومت کے اقدامات قابل ستائش ہیں۔ برطانوی وزیراعظم نے کہا کہ پنجاب میں صحت‘ تعلیم‘ سکلز ڈویلپمنٹ پروگرام کے حوالے سے وزیراعلیٰ محمد شہبازشریف نے قابل قدر اقدامات کئے ہیں ۔ ہم برطانیہ کے ٹیکس گزاروں کو پنجاب میں ان کے فنڈز کے صحیح استعمال کے بارے میں بخوبی بتا سکتے ہیں۔ برطانیہ آئندہ بھی پنجاب میں مختلف شعبوں میں تعاون جاری رکھنے پر خوشی محسوس کرے گا۔
لندن میں دورے کے پہلے روز  پاکستان بزنس اینڈ انویسٹمنٹ کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے وزیراعلی پنجاب محمد شہبازشریف نے کہا کہ اس بات میں کوئی شک نہیں کہ پاکستان کو مختلف چیلنجز کا سامناہے لیکن موجودہ حکومت وزیراعظم محمد نوازشریف کی موثر حکمت عملی کے تحت ا ن پر قابو پانے میں کامیاب ہوجائے گی  پاکستان کاشمار بہت جلد ترقی یافتہ اقوام میں ہوگا۔ وزیراعلیٰ محمد شہبازشریف نے اپنے خطاب میں کہا کہ دہشت گردی کے خلاف جنگ میں پاکستان نے 40ہزار سے زائد قیمتی ا نسانی جانوں کی قربانیاں دی ہیں - جس میں ہماری بہادر سکیورٹی افواج کے افسر اور جوان بھی شامل ہیں- پاکستان کی یہ بیش بہا قربانیاں اس عز م کاواضح ثبوت ہے کہ وہ پاک وطن کو دہشت گردی او رانتہا پسندی کے نا سور سے پاک کرنے کا بھرپور عز م رکھتاہے-چین کی طرف سے پاکستان کے لئے 32ارب ڈالر کا ترقیاتی پیکیج وزیراعظم محمد نوازشریف کی قیادت پر چینی لیڈر شپ اور حکومت کے بھرپور اعتماد کا ا ظہار ہے- میں یورپ او رامریکہ کے سرمایہ کارو ں سے اپیل کرتاہوں کہ وہ اس موقع کا فائدہ اٹھاتے ہوئے پاکستان میں مختلف شعبوں خصوصاً توانائی سیکٹر میں بھرپور سرمایہ کاری کریں-انہوںنے کہاکہ برطانیہ کا ترقیاتی ا دارہ ڈیفڈ پاکستان میں دنیا کا سب سے بڑا مدر اینڈ چائلڈ کئیر پروگرام شروع کرنے جا رہاہے جس پر میں حکومت برطانیہ کا شکر یہ ادا کرتا ہوں -
     دوسرے روز وزیراعلیٰ پنجاب محمد شہباز شریف کی مصروفیات میں بیرونی سرمایہ کاروں سے ملاقات ہر لحاظ سے اہمیت کی حامل تھی وزیراعلیٰ نے بیرونی سرمایہ کاروں سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ پاکستان سرمایہ کاری اور منافع کے لحاظ سے دنیا کے بہترین  ممالک میں سے ایک ملک بن چکا ہے۔ توانائی سمیت ہر شعبہ میں سرمایہ کاری کیلئے ون ونڈو سہولت مہیا کی گئی ہے۔ بیرونی سرمایہ کارپاکستان کے سرمایہ دوست ماحول سے فائدہ اٹھائیں ،انہیں ہر قسم کا تحفظ اور سہولت فراہم کریںگے۔  وزیراعلیٰ نے بیرونی سرمایہ کاروں کو پاکستان خصوصاً پنجاب میں توانائی سمیت مختلف شعبوں میں سرمایہ کاری کی دعوت دیتے ہوئے کہا کہ آپ کے سرمائے کی ایک ایک پائی امانت سمجھ کر شفاف طریقے سے عوام کی فلاح و بہبود کے منصوبوں پر خرچ کی جائے گی۔بیرونی سرمایہ کاروں کے سیکیورٹی کے بارے میں تحفظات ترجیحی بنیادوںپر دور کریں گے۔ وزیراعظم محمد نواز شریف کی قیادت میں موجودہ حکومت کے درست اور موثر اقدامات کے باعث تمام معاشی اشاریئے بہتر ہو رہے ہیں۔ ڈالر کے مقابلے میں روپے کی قدر میں تقریباً 15 فیصد اضافہ ہوا ہے۔ ڈالر کی قدر میں کمی اور روپیہ مستحکم ہونے سے پاکستان پر بیرونی قرضوں کا بوجھ 800 ارب روپے کم ہوا ہے۔ سٹاک مارکیٹ نئی بلندیوں کو چھو رہی ہے اور بیرونی سرمایہ کاروں کا اعتماد بحال ہوا ہے۔ تجارتی خسارے میں کمی ہوئی ہے جبکہ ٹیکس ٹو جی ڈی پی شرح میں اضافہ ہو رہا ہے اور مجموعی قومی پیداوار میں بھی بہتری آئی ہے۔ مہنگائی کی شرح میں نمایاں کمی واقع ہوئی ہے۔ وزیراعظم محمد نواز شریف کی حکومت کو جب بھی عوام کی خدمت کا موقع ملا ہے تو معیشت کو بہتر بنا کر عوام کی زندگیوں میں بہتری لانے کیلئے ٹھوس اقدامات کئے گئے ہیں اور ان کے سابق ادوار میں بھی معیشت کو مضبوط بنانے کے حوالے سے نمایاں کام کیا گیا اور موجودہ دور میں بھی وزیراعظم محمد نواز شریف کی پہلی ترجیح معیشت کو مستحکم کرنا ہے اور مسلم لیگ (ن) کی حکومت نے معاشی استحکام کیلئے 11 ماہ میں شبانہ روز محنت کرکے اہداف کو حاصل کیا ہے۔  قدرت نے پاکستان کو بہترین وسائل سے مالا مال کیا ہے۔ پاکستان میں تانبے، لوہے، کوئلے اور دیگر معدنی ذخائر بڑے پیمانے پر موجود ہیں جبکہ گیس بھی وسیع پیمانے پر موجود ہے۔ توانائی، لائیوسٹاک، ڈیری ڈویلپمنٹ اور انفارمیشن ٹیکنالوجی میں سرمایہ کاری کے وسیع مواقع موجود ہیں۔ پنجاب حکومت جنوبی پنجاب میں جدید سولر پارک قائم کر رہی ہے جہاں سے ایک ہزار میگاواٹ بجلی پیدا ہوگی۔ پاکستان میں یہ اپنی نوعیت کا منفرد منصوبہ ہے جس کیلئے بیرونی سرمایہ کاروں کو بھی سرمایہ کاری کی دعوت دی گئی ہے۔  پاکستان میں 70 سے زائد برطانوی کمپنیاں کام کر رہی ہے اور میں سمجھتا ہوں کہ آنے والے دنوں میں برطانوی کمپنیوں کی تعداد میں نمایاں اضافہ ہوگا۔  وزیراعلیٰ نے کہا کہ سابق حکومتوں نے اپنی غفلت اور نااہلی کے باعث عوامی مسائل کے حل پر کوئی توجہ نہیں دی اور ہماری حکومت کو سابق حکومتوں کے بوئے ہوئے کانٹے ایک ایک کرکے چننے پڑ رہے ہیں اور انشاء اللہ ہم تمام کانٹے صاف کرکے ملک کو گل و گلزار بنائیں گے۔  ٹیکس وصولیوں کے نظام کو بہتر بنایا جا رہا ہے اور وسائل کے شفاف استعمال کو یقینی بنایا گیا ہے۔ ٹیکس نظام میں بہتر ی آنے سے وصولیوں میں بھی خاطرخواہ اضافہ ہو رہا ہے۔  وزیراعظم محمد نواز شریف کی قیادت میں مسلم لیگ (ن) کی حکومت ہر محاذ پر تیز رفتاری کے ساتھ کام کر رہی ہے اور حکومت کے موثر اقدامات کے باعث معاشی و اقتصادی صورتحال میں بہتری کے ساتھ ساتھ صنعت، زراعت اور دیگر شعبوں کی پیداوار میں بھی اضافہ ہو رہا ہے۔ انہوں نے بیرونی سرمایہ کارو ںپر زور دیتے ہوئے کہا کہ یہ وقت پاکستان میں سرمایہ کاری کیلئے انتہائی موزوں اور سازگار ہے۔
    یہ امر قابل ذکر ہے کہ  وزیراعلیٰ محمد شہباز شریف کے دورہ برطانیہ کے دوسرے روز کے دوران برطانیہ کی اعلیٰ قیادت نے پنجاب میں عوام کی فلاح و بہبود کیلئے شروع کئے جانے والے منصوبوں میں خصوصی دلچسپی کا اظہار کیا ہے برطانوی لیڈرشپ نے وزیراعلیٰ محمد شہباز شریف کی قیادت پر مکمل اعتماد کا اظہار کیا ۔ برطانوی وزیراعظم ڈیوڈ کیمرون اور وزیر برائے بین الاقوامی ترقی جسٹن گریننگ نے ملاقاتوں کے دوران وزیراعلیٰ محمد شہباز شریف کی حکومت کی طرف سے حالیہ برسوں میں صوبے کی ترقی، سکل ڈویلپمنٹ، تعلیم اور صحت کے شعبوں میں کئے جانے والے اقدامات کی تعریف کی اور وزیراعلیٰ شہباز شریف کی قیادت میں پنجاب حکومت کی کارکردگی کو رول ماڈل قرار دیا۔ وزیراعلیٰ محمد شہباز شریف سے برطانوی وزیر خارجہ ولیم ہیگ نے ملاقات میںخصوصی طور پر اپنی تقریروں کا مجموعہ بھی  پیش کیا۔ ولیم ہیگ نے بھی وزیراعلیٰ کی متحرک شخصیت اور قائدانہ صلاحیتوں کی تحسین کی۔ برطانیہ کی وزیر داخلہ تھریسامے نے وزیراعلیٰ سے ملاقات کے دوران پنجاب میں قائم کی جانے والی فرانزک سائنس لیب کی تعریف کرتے ہوئے کہا کہ بلاشبہ اس فرانزک لیب کا قیام وزیراعلیٰ شہباز شریف کا ایک شاندار کارنامہ ہے۔ سٹیٹ آف دی آرٹ فرانزک لیب کا مقابلہ کسی بھی ترقی یافتہ ملک کی لیب سے کیا جا سکتا ہے۔
    دورہ برطانیہ کے تیسرے روز وزیراعلیٰ پنجاب محمد شہباز شریف سے لندن میں برطانوی سرمایہ کار کمپنیوں کے سربراہوں اور نمائندوں نے الگ الگ ملاقاتیںکیں۔وزیراعلیٰ نے چیئرمین پنجاب سرمایہ کاری بورڈ سید مراتب علی کو لندن میں برطانوی کمپنیوں سے مزیدرابطوں کی ہدایت کی۔
    برطانیہ کے وزیراعظم ڈیوڈ کیمرون نے صوبہ پنجاب میں برطانوی امداد کے درست استعمال کے حوالے سے وزیراعلیٰ محمد شہباز شریف کی کاوشوں اور عزم کو سراہتے ہوئے کہا  کہ وزیراعلیٰ شہباز شریف کی ذاتی دلچسپی کے باعث برطانوی امداد کے استعمال کے مثبت نتائج سامنے آئے ہیںاور ہم مطمئن ہیں کہ پنجاب میں برطانوی امداد درست انداز سے استعمال کی جارہی ہے اوروزیراعلیٰ محمدشہباز شریف برطانوی امداد کو عوام کی فلاح وبہبود پر خرچ کررہے ہیں جو قابل تعریف ہے۔  صوبے کے عوام کی فلاح وبہبود کے لئے شہباز شریف کا خلوص اورعزم متاثرکن ہے اور یقیناوزیراعلیٰ محمد شہباز شریف کے اقدامات سے نہ صرف صوبہ پنجاب کے عوام کو فائدہ پہنچے گا بلکہ پاکستان کا مثبت امیج بھی ابھرے گا۔ امید ہے کہ پاکستان کی حکومت جمہوریت کی مضبوطی اور قانون کی حکمرانی کے لیے اسی طرح کام کرتی رہے گی۔
    دورہ برطانیہ کے تیسرے روز نالج پارک کے منصوبے کی تعارفی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے وزیراعلیٰ محمد شہبازشریف نے کہا کہ لاہور میں قائم ہونے والانالج پارک جنوبی ایشیاء کے خطے میں بین الاقوامی معیار کا پہلاتعلیمی مرکز ہوگا،جس میں اساتذہ اور ملکی و غیر ملکی طلبہ کے لئے رہائش گاہیں،شاپنگ مال،تفریحی مراکز اور زندگی کی دیگر تمام سہولتیں دستیاب ہوںگی۔وزیراعلیٰ محمد شہباز شریف نے اپنے خطاب میں کہا کہ اعلی تعلیم کے اپنی نوعیت کے اس منفردمرکزکے قیام کا بنیادی مقصدان پاکستانی نوجوانوں کو اپنے ملک میں اعلی تعلیم کی سہولتیں فراہم کرنا ہیں جن کے پاس مہنگی تعلیم حاصل کرنے کے لیے بیرون ملک جانے کے لیے وسائل نہیں ہیں۔اس نالج پارک میں قائم ہونے والے تعلیمی اداروں میں صرف پاکستان کے ہی نہیں بلکہ دوسرے ممالک کے طالب علم بھی تعلیم حاصل کریں گے۔ نالج پارک میںغیر ملکی تعلیمی اداروں کے کیمپس کھولنے کے لئے سرمایہ کاروں کو سہولتیں دی جائیں گی۔پنجاب کی پہلی انفارمیشن ٹیکنالوجی یونیورسٹی کا کیمپس بھی نالج پارک میں بنے گا۔  پاکستان اوربرطانیہ کی دوستی مضبوط تاریخی اور ثقافتی رشتوں پر استوار ہے اور ہم تعلیم کے میدان میں برطانیہ کے تعاون کو قدر کی نگاہ سے دیکھتے ہیں۔ پاکستان میں انتہاء پسندی اور تشدد کے رجحانات راتوں رات پیدا نہیں ہوئے اور اب انہیں ختم ہونے میں بھی وقت لگے گا ،تاہم ہمیں پاکستان کی موجودہ صورتحال کو اس کے صحیح تاریخی تناظر میں دیکھنے کی ضرورت ہے ۔  پاکستان نے دہشت گردی کے خلاف جنگ میں 40ہزارقیمتی انسانی جانوں کی قربانیاں دی ہیں اور دہشت گردی کے خاتمے کیلئے ہمارا عزم کسی بھی شک و شبہ سے بالاتر ہے۔میں دیانتداری سے یہ سمجھتا ہوں کہ عسکریت اورانتہا پسندی کے موجودہ رجحان پر صرف بندوق کی گولی سے قابو نہیں پایا جاسکتا ،اس کے لیے ہمیں دہشت گردی کے مختلف اسباب کا زمینی حقائق کے مطابق جائزہ لیکر انہیں دور کرنا ہوگا۔شہباز شریف نے کہا کہ تعلیم کو عام کیے بغیر عوام میں رواداری،  برداشت اور وسعت نظری کے کلچر کو متعارف نہیں کرایا جاسکتا ،اسی طرح ہمیں معصوم مگر غریب نوجوانوں کو انتہا ء پسندوں کے چنگل سے نجات دلانے کے لیے ان کی بیماری اوربھوک کا مداوا کرنا ہوگا۔تعلیم کے بغیرترقی کا کوئی تصور مکمل نہیں ہوسکتااورتعلیم بذریعہ روزگار ہی نہیں، یہ قوم کو عزت نفس کا سبق بھی دیتی ہے۔پاکستان میں برطانیہ کے ہائی کمشنر فلپ بارٹن نے اس موقع پر اپنے خطاب میں وزیراعظم محمد نوازشریف اور وزیراعلیٰ پنجاب محمد شہباز شریف کی فروغ تعلیم کے لیے کاوشوں اوراقدامات کی تعریف کرتے ہوئے کہا کہ تعلیم کے میدان میں مثبت پیش رفت کی جارہی ہے اور برطانیہ پنجاب سمیت چاروں صوبوں میں فروغ تعلیم کے لیے اٹھائے جانے والے اقدامات کے حوالے سے تعاون جاری رکھے گا۔  لاہور میں بہت جلد برطانیہ کا ڈپٹی ہائی کمیشن قائم کیا جائے گا۔تقریب میں برطانوی سرمایہ کاروں ،یونیورسٹیز کے سربراہوں،ڈینزاور ماہرین تعلیم نے بڑی تعداد میں شرکت کی اورلاہور میںنالج پارک کے قیام کے منصوبے میں گہری دلچسپی کا اظہارکیا۔ اسی روز لندن میں مقیم پاکستانیوں کی طرف سے اپنے اعزاز میں دیئے گئے استقبالیے سے خطاب کرتے ہوئے وزیراعلی پنجاب محمد شہبازشریف نے  کہا کہ بیرون ملک پاکستانیوں کے لئے بننے والا کمیشن ایک موثر ادارہ ہوگا جو وطن سے دور رہنے والے پاکستانیوں کے مسائل کے حل میں اہم کردار ادا کرے گا  پچھلے دور حکومت میں کوئی دن ایسا نہیں گذرتا تھا جب حکمرانوں کی بدعنوانیوں کی داستانیں ٹی وی اور اخباروں پر نہیں آتی تھیں - ہماری حکومت کو ایک برس ہوگیاہے لیکن اللہ کے فضل سے ہمارے بدترین دشمن بھی مسلم لیگ کی حکومت پر کرپشن کا کوئی الزام نہیں لگا سکے -  وزیراعظم نوازشریف کی قیادت میں پاکستان کی معیشت میں تیزی سے بہتری آرہی ہے -  ہمارے روپے کی قیمت بہتر ہوئی ہے او رہمارے زرمبادلہ کے ذخائر 12 ارب ڈالر سے زیادہ ہوچکے ہیں -   چین نے پاکستان کیلئے 32 ارب ڈالر کا ترقیاتی پیکج دیاہے جس کی مدد سے  پاکستان اگلے 7 سالوں میں 20 ہزار میگا واٹ بجلی پیدا کرسکے گا - برطانیہ کے دورہ کے دوران میں نے  دیکھاکہ وزیراعظم سے لے کر برطانیہ کے تمام شعبوں کے حکام نے دریافت کیا کہ ہم پاکستان کی مدد کس طر ح کر سکتے ہیں -
    لندون میں دورہ برطانیہ کے چوتھے روز پاکستان مسلم لیگ (ن) کے عہدیداروں اور کارکنان کی طرف سے دیئے گئے استقبالیے میں وزیراعلیٰ پنجاب محمد شہبازشریف نے کہا  کہ وزیراعظم محمدنوازشریف کی قیادت میں ملک کو توانائی بحران اور انتہاء پسندی کے ناسور سے نجات دلائیں گے۔عوام سے کیا گیا ایک ایک وعدہ یاد ہے جسے ہر قیمت پر پورا کریں گے۔ ہمارے لیے یہ بات باعث اعزاز ہے کہ پنجاب حکومت کی کارکردگی کو برطانیہ کے وزیراعظم ڈیوڈ کیمرون ،وزیرخارجہ ولیم ہیگ، وزیرداخلہ تھریسا مے اوروزیربرائے بین الاقوامی ترقی جسٹن گریننگ نے شاندار الفاظ میں سراہا ہے،یہ محض حسن اتفاق نہیں کہ ہمارے عالمی دوست پاکستان سے دل کھول کرتعاون کررہے ہیں بلکہ انہیں یقین ہے کہ پاکستان میں ایک دیانتدار، ذمہ دار اور شفافیت پر یقین رکھنے والی حکومت برسراقتدار ہے، اگر ایسا نہ ہوتا تو ہمارے دوست اپنی یہ بند مٹھی پہلے بھی کھول سکتے تھے، ہم اپنے دوست ممالک کے شکرگزار ہیں کہ انہیں پاکستان اورپاکستانی عوام کی مشکلات کا احساس ہے،لیکن ہماری منزل خود مختاری،خود انحصاری اوراپنے وسائل کو بروئے کار لاکر خوشحالی کا حصول ہے۔وزیراعلیٰ محمد شہبازشریف نے اپنے خطاب میں کہا کہ ایک برس قبل جب پاکستان مسلم لیگ(ن) کی حکومت نے اقتدار سنبھالا تو حالات انتہائی خراب تھے ۔ملکی معیشت تباہی کے دہانے پر پہنچ چکی تھی،کرپشن کا دور دورہ تھا ۔ادارے زبوں حالی کا شکار تھے ۔لیکن ہم نے تمام مشکلات کے باوجود عوام کی خدمت کو اپنا اوڑھنا بچھونا بنایا اورآج ایک بر س کے بعدصورتحال میں خاطرخواہ بہتری آئی ہے ،تمام معاشی اعشارئیے بہتر ہوئے ہیں۔ڈالر کے مقابلے میں روپے کی قدر میں بہتری سے پاکستان پر 800ارب روپے بیرونی قرضوں کا بوجھ کم ہوا ہے۔پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں کمی کا فائدہ عوام تک پہنچایا گیا ہے ،جس سے مہنگائی کی شرح بھی کم ہوئی ہے ۔زرمبادلہ کے ذخائر بہتر اورٹیکس وصولیوں کی شرح میں اضافہ ہوا ہے۔ برطانیہ کے ادارے ڈیفڈ کے تعاون سے جنوبی پنجاب کے چار اضلاع سے شروع کیا جانے والا سکل ڈویلپمنٹ پروگرام خود انحصاری اور خود مختاری کی منزل کی طرف ایک حوصلہ افزاء اقدام ہے، جس کے تحت صوبے کے 40ہزار سے زائد نوجوانوں کو ہنر مند بنایا گیا ہے اور اب اس پروگرام کا دائرہ کار 18اضلاع تک بڑھا دیا گیا ۔ سکل ڈویلپمنٹ پروگرام کو پاکستان کے دیگر صوبوں کے ساتھ ساتھ دوسرے ممالک کے لیے بھی رول ماڈل بنائیں گے۔ہر پاکستانی کو فخر ہونا چاہیے کہ پاکستان کا نام بیرونی دنیا میں مثبت الفاظ میں لیا جانے لگا ہے اوریہ بہت بڑی کامیابی ہے۔ پنجاب حکومت نے اوورسیزپاکستانیوں کے لئے کمیشن بنانے کا فیصلہ کیا ہے اور اس کمیشن کے قیام میں بیرون ملک مقیم پاکستانیوں کی تجاویز اور سفارشات کو اولیت دی جائیگی۔ہم نے خود جلاوطنی کے دوران بیرون ملک دن گزارے ہیں اورہم جانتے ہیں کہ بیرو ن ملک بسنے والے پاکستانیوں کے مسائل کیا ہیں؟  پاکستان کے لیے 32ارب ڈالرکا ترقیاتی پیکیج چین کا وزیراعظم محمد نواز شریف کی قیادت پر بھر پور اعتماد کامظہر ہے۔یہ32ارب ڈالرکا پیکیج چین کی قیادت کا پاکستانی عوام کے لیے ایک شاندار تحفہ ہے اور اس تاریخی پیکیج سے 20ہزار میگاواٹ کے بجلی کے منصوبے اگلے 7 برس کے دوران لگائے جائیں گے،جس سے ملک میں توانائی بحران کاخاتمہ ہو گا۔ رواں ماہ پاکستان میں توانائی کے مختلف منصوبوں پر کام کا آغاز کیا جارہا ہے۔پورٹ قاسم اورساہیوال میں کوئلے سے چلنے والے پاور پلانٹس کا سنگ بنیادرکھا جائے گا،جن سے مجموعی طورپر 2500میگاواٹ بجلی اگلے 3برس میں حاصل ہوگی۔سابق حکمرانوں کے لالچ اور بدترین مجرمانہ غفلت کے باعث 450میگاواٹ کا نندی پور پاور پراجیکٹ3برس تک سرد خانے میں پڑارہا۔قومی اہمیت کے اس اہم منصوبے کی مشینری کراچی پورٹ پر زنگ آلود ہوگئی لیکن سابق حکمرانوں کے کان پر جوں تک نہ رینگی۔چینی کمپنی کے انجینئرواپس چلے گئے۔سابق حکمرانوں نے نندی پور پاور پراجیکٹ کو کرپشن کے قبرستان میں دفن کردیاتھا لیکن مسلم لیگ (ن) کی حکومت نے آتے ہی اس اہم منصوبے کودوبارہ زندہ کیا اورصرف چند ماہ کے اندرمنصوبے پر اس تیز رفتاری اوراعلی معیار کے ساتھ کام کیا گیا کہ پہلی ٹربائن جو کہ نومبر 2014ء میں چلنی تھی وہ رواں ماہ بجلی کی پیداوار کا آغاز کررہی ہے۔عزم و ہمت کی اس داستان کے بنیادی ستون دیانتداری،محنت ،شفافیت اور ایمانداری ہیں۔  مسلم لیگ(ن) کی حکومت کا ہر قدم عوام کی بہتری کے لیے جانب اٹھ رہا ہے ۔تمام منصوبے شفافیت اور اعلی معیار کو مدنظر رکھ کر مکمل کیے جارہے ہیں۔عوام کے وسائل کو عوام کی فلاح و بہبود پر ہی خرچ کرنے کی اعلی مثالیں قائم کی گئی ہیں۔ایک برس کے دوران ہمارے مخالفین بھی ایک پائی کی خیانت کا الزام نہیں لگاسکے۔   
    برطانیہ کے وزیراعظم ڈیوڈ کیمرون ،اہم وز راء اور برطانوی حکام بھی وزیراعلیٰ پنجاب محمد شہباز شریف کی قائدانہ صلاحیتوں اور کام کرنے کے انداز کے معترف نظر آئے پنجاب کی ترقی کے لئے شہبازشریف کے دور رس اقدامات کو شاندار الفاظ میںسراہا ہے- وزیراعظم پاکستان محمد نوازشریف کی قیادت میں برطانیہ میں پاکستانی وفد کو زبردست پذیرائی ملی ، بلاشبہ یہ دورہ پا کستان اور برطانیہ کے تعلقات کو مزید وسعت دینے میں سنگ میل ثابت ہوگا- دورہ سے دونوں ممالک کے مابین تعاون کی نئی راہیں ہموار ہوئی ہیں- وزیراعلیٰ محمد شہبازشریف نے دورہ برطانیہ کے حوالے سے کہا کہ برطانیہ کے حکمرانو ں کی جانب سے پاکستان کی موجودہ قیادت، حکومت کی پالیسیوں پر اظہار اعتماد اورپنجاب حکومت کی کارکردگی کی ستائش پنجاب ہی نہیں بلکہ پاکستان کے ہر شہری کے لئے باعث فخر ہے-ہمارے عالمی دوستوں کا پاکستان کے ساتھ بڑھتا ہوا تعاون اس امر کا عکاس ہے کہ پاکستان میں ایسی قیادت برسر اقتدا رہے جو دیانتداری سے عوام کی خدمت میں مصروف ہے اور اس کی ٹھوس معاشی پالیسیوں کی بدولت عوام کی تکالیف میں کمی آرہی ہے -  برطانیہ کے ادارے ڈیفڈ کی پنجاب حکومت کے ایجوکیشنل انڈومنٹ فنڈ کے لئے تعاون ، پروگرام کی کامیابی اور افادیت کا منہ بولتا ثبوت ہے-عالمی اداروں کی طرح برطانوی حکام نے بھی پنجاب حکومت کے سکل ڈویلپمنٹ پروگرام ، تعلیم ،صحت اور دیگر شعبوں کی ترقی کے لئے اٹھائے گئے اقدامات کی تحسین کی ہے جو حوصلہ افزاء بات ہے -