نیو یارک ایک مرتبہ پھر۔۔۔۔۔

نیو یارک ایک مرتبہ پھر۔۔۔۔۔

منگل کی شام امریکہ میں ہیلووین کا تہوار منایا جا رہا تھا۔ حملہ آور کئی دنوں سے منصوبہ بندی کر رہا تھا۔ نیو یارک مین ہیٹن کی سڑکوں پر پیدل چلنے اور سائیکل سواروں کی خاصی تعداد ہوتی ہے۔ حملہ آور نے دہشت پھیلانے کے لئے ہیلو وین تہوار کا دن کا انتخاب کیا۔ راہگیروں اور سائیکل سواروں پر ٹرک چڑھا دینے کا جنونی ایکشن اس سے پہلے یورپی ملکوں میں بھی کیا جا چکا ہے۔ یہ ظلم ہے اور اس سے بھی بڑا ظلم یہ کہ اسلام اور مسلمانوں کو بدنام کرنے کی گھناﺅنی سازش کی جا رہی ہے۔
امریکی صدر ڈونالڈ ٹرمپ کا خیال تھا کہ ازبک تارکِ وطن جس نے نیو یارک سٹی میں ٹرک حملے میں آٹھ افراد کو ہلاک کیا، موت کی سزا کاحقدار ہے۔ ٹرمپ نیو یارک سٹی کے اس دہشت گرد کو گوانتا نامو بھیجنا چاہیں گے۔ لیکن، اعداد و شمار بتاتے ہیں کہ اس عمل میں طویل عرصہ لگ جاتا ہے“ جب کہ امریکی عدالتی نظام کے ذریعے مقدمہ چلانے میں کم وقت درکار ہوتا ہے۔ یاد رہے کہ ازبک باشندے نے ایک ٹرک کرائے پر لیا اور منگل کی شام نیو یارک مین ہٹن میں سائیکل کے راستے پر چڑھ دوڑا، جہاں کافی لوگ موجود تھے جس کی زد میں آکر سائیکل سوار اور پیدل چلنے والے کچلے گئے۔صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے کہا ہے کہ انہوں نے منگل کو نیویارک میں ہونے والے حملے کے بعد ہوم لینڈ سکیورٹی کے محکمے کو امریکہ آنے والے غیر ملکی شہریوں کی چھان بین کا عمل مزید سخت کرنے کا حکم دیا ہے۔یاد رہے کہ صدر ٹرمپ گزشتہ سال اپنی انتخابی مہم کے دوران اور اس کے بعد بھی بارہا امریکہ میں مقیم غیر قانونی تارکینِ وطن کے خلاف سخت کریک ڈا¶ن کرنے اور انہیں امریکہ سے نکالنے اور مزید تارکینِ وطن کی آمد روکنے کے بیانات دیتے رہے ہیں۔
صدر ڈونلد ٹرمپ نے کہا ہے کہ منگل کی رات نیویارک کے علاقے میں ہیٹن میں دہشت گردی کے ذریعے کئی افراد کو ہلاک کرنے والا ازبک حملہ آور لاٹری ویزے پر امریکہ میں داخل ہوا تھا۔ صدر ٹرمپ کا کہنا تھا کہ دہشت گرد حملوں کی لہر کے تناظر میں وہ ویزہ لاٹری پروگرام فوری طور پر ختم کرنے کے لیے کانگریس کے ساتھ مل کر کام کرنا چاہتے ہیں۔
انہوں نے کہا کہ میں آج سے متنوع لاٹری پروگرام ختم کرنے کے عمل کا آغاز کر رہا ہوں۔ میں کانگریس سے یہ کہنے جا رہا ہوں کہ وہ اس پروگرام سے جان چھڑانے کے لیے فوری طور پر اپنا کام شروع کر دے۔
صدر ٹرمپ کا کہنا تھا کہ ڈاﺅرسٹی لاٹری کے الفاظ سننے میں اچھے لگتے ہیں لیکن یہ پروگرام اچھا نہیں ہے یہ ہمارے لیے اچھا ثابت نہیں ہوا۔ ہم اس پروگرام کے خلاف رہے ہیں۔
دنیا بھر کے ایسے افراد جو امریکی شہریت حاصل کرنے کے خواہش مند ہوں لیکن امریکہ میں ان کے خاندان کا کوئی فرد موجود نہ ہو یا اسے روزگار کی ضمانت دینے والا کوئی کاروباری شخص یا ادارہ نہ ہو، یا وہ پناہ گزین کی شرائط پر پورا نہ اترتا ہو تو وہ امریکہ میں مستقل رہائش کی دستاویز گرین کارڈ حاصل کرنے کے لیے ویزہ لاٹری پروگرام میں حصہ لے سکتا ہے۔ اس پروگرام میں حصہ لینے کے لیے ضروری ہے کہ اس کے پاس کم ازکم ہائی سکول کی تعلیم مکمل کرنے کا سرٹیفکیٹ ہو یا کسی بھی شعبے میں کام کرنے کا چند سال کا تجربہ ہو۔
اس پروگرام کے تحت امریکہ مختلف مواقعوں پر مختلف ملکوں کے شہریوں کے لیے مخصوص تعداد میں ویزے جاری کرتا ہے جن کا انتخاب لاٹری کے ذریعے کیا جاتا ہے، اسی لیے اس پروگرام کو ویزہ لاٹری بھی کہا جاتا ہے۔ پاکستان کے لئے لاٹری ویزہ سہولت ختم ہو چکی ہے۔ پاکستان کو مہیا کوٹہ استعمال ہو چکا ہے لیکن دکھ کی بات ہے کہ ایک ذہنی مریض کی وجہ سے دنیا بھر سے امریکہ آنے کے خواہشمندوں کے لئے لاٹری ویزہ سہولت ختم کر دی جائے۔ نیو یارک حالیہ واقعہ کے بعد امریکہ میں ایک مرتبہ پھر مسلمانوں کے لئے مشکل وقت شروع ہو گیا ہے۔ امیگریشن قانون میں مزید سختی کا امکان ہے۔
٭٭٭٭٭