مٹھاس کی مقدار 10 برکس ہونے پر آم قابل برداشت ہوتا ہے: محکمہ زراعت

راولپنڈی(این این آئی) محکمہ زراعت پنجاب کے ترجمان نے کہا ہے کہ آم کے پھل میں مٹھاس یا شکر کی مقدار 10 سے 12 ڈگری برکس ہو جائے تو یہ برداشت کے قابل ہو جاتا ہے۔ اس مرحلہ پر آم کو درخت سے توڑلیا جائے تو پکنے پر آم کی تمام خصوصیات بہتر طور پر نمایاں ہوتی ہیں۔ اگر آم کو برآمد کرنا مقصود ہو تو پھر شکر کی مقدار 8 سے 10 ڈگری برکس ہونی چاہیے کیونکہ اس سے آم کے پھل کی بعداز برداشت زندگی بڑھ جاتی ہے۔ ترجمان نے کہا کہ پختگی کے معیار کو عام طور پر تین مختلف مرحلوں نا پختگی، درمیانی پختگی اور مکمل پختگی میں تقسیم کیا گیا ہے ٗ یہ مرحلے سائنسی بنیادوں پر تشکیل دئیے گئے ہیں جو کہ آم کی بعد از برداشت زندگی پر نمایاں اثرات مرتب کرتے ہیں۔ ناپختگی کے مرحلے کے دوران ایسا محسوس ہو تا ہے کہ پھل کا سا ئز مکمل ہو چکا ہے جو بظاہر صحیح نظر آتا ہے مگر ابھی اس کے اندر گٹھلی کا سائز اور مٹھاس کی مقدار صحیح نہیں ہوتے۔ اگر اس مرحلہ پر ہم مٹھاس کی مقدار ، مٹھاس دیکھنے والے آلے ریفریکٹو میٹرکی مدد سے جانچیں تو معلوم ہوگا کہ مٹھاس یا شکر 8 ڈگری برکس سے بھی کم ہے۔ پختگی کا دوسرا مر حلہ جسے ہم درمیانی پختگی کہتے ہیں آم کی ما رکیٹنگ کے لحاظ سے نہایت اہم ہو تا ہے جس کی بنیاد پر اس بات کا تعین کیا جاتا ہے کہ پھل کو کتنے عرصے تک محفوظ رکھا جا سکتا ہے۔ اس مرحلے کے دوران توڑا گیا پھل پکنے کے بعد تمام خصوصیات کا حامل ہوتا ہے۔