پنجاب میں سی این جی شعبہ سے امتیازی سلوک برتا جا رہا ہے: غیاث پراچہ

لاہور(نیوزرپورٹر)چئیرمین سپریم کونسل آل پاکستان سی این جی ایسوسی ایشن غیاث عبداللہ پراچہ نے کہا ہے کہ پنجاب میں سی این جی کے شعبہ سے امتیازی سلوک کیا جا رہا ہے۔ہمیں بتایا جائے کہ سی این جی مالکان، ملازمین اور ٹرانسپورٹ سے وابستہ لاکھوں لوگ اپنے گھروں کا چولہا کیسے جلائیں۔سی این جی مالکان اور ملازمین بھی پاکستانی ہیں مگر انھیں دشمن نہ سمجھا جائے ۔ٹیکسٹائل اور کھاد کے کارخانوں سمیت تمام شعبوں کو گیس مل رہی ہے مگر سی این جی سیکٹر کو بند کرنے کے لئے پریشر میں کمی کا بہانہ بنا کے عدالتی فیصلہ پر اثر انداز ہونے کی کوشش کی جا رہی ہے۔ گیس کے پریشر میں اچانک کمی مصنوعی ہے جو ایک سازش ہے۔عدالت نے جڑواں شہر میں صرف ستر سی این جی سٹیشن کھولنے کا حکم دیا ہے جبکہ پانچ سو تیس بدستور بند ہیں جو بیوروکریسی کومنظور نہیں اسلئے عوام کو ازیت دی جا رہی ہے۔ سی این جی شعبہ کے لئے بھی کوٹہ مخصوص کیا جائے یا حکومت مالکان اور بے روزگار ہونے والے مزدوروں کے نقصانات کا ازالہ کرے۔