حکومت پنجاب انفراسٹرکچر ڈویلپمنٹ میں واپس لے: شیخ ارشد

لاہور(کامرس رپورٹر) لاہور چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری کے صدر شیخ محمد ارشد نے ایک مرتبہ پھر پنجاب حکومت پر زور دیا ہے کہ وہ پنجاب انفراسٹرکچر ڈویلپمنٹ سیس کی فوری واپسی کا اعلان کرکے کاروباری برادری میں پائی جانے والی بے چینی کا خاتمہ کرے۔ ایک بیان میں لاہور چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری کے صدر نے کہا کہ موجودہ حالات میں کاروباری برادری پنجاب انفراسٹرکچر ڈویلپمنٹ سیس کی متحمل نہیں ہوسکتی ، یہ ایک دوہرا ٹیکس ہے جس کی وجہ سے کاروباری سرگرمیاں بہت متاثر ہورہی ہیں۔ پنجاب انفراسٹرکچر سیس ایک امتیازی ٹیکس ہے جس کی وجہ سے تاجروں میں پیدا ہونے والی بے چینی دور کرنے کے لیے اس کے خاتمے کا نوٹیفیکیشن فوری طور پر جاری کرنے کی اشد ضرورت ہے۔ انہوں نے کہا کہ اگر یہ سیس فوری طور پر ختم نہ کیا گیا تو کاروباری ماحول پر انتہائی منفی اثرات مرتب ہونگے، تاجر پہلے ہی ٹیکس حکام کے صوابدیدی اختیارات ، بینکوں سے لین دین پر ودہولڈنگ ٹیکس ، بلاجواز نوٹسز، چھاپوں اور مارکیٹوں کے باہر اینٹی سمگلنگ عملے کے خود ساختہ ناکوں کی وجہ سے پریشان ہیں جبکہ پنجاب انفراسٹرکچر ڈویلپمنٹ سیس جلتی پر تیل کا کام کررہاہے۔ انہوں نے کہا کہ اگر حکومت نے اس سلسلے میں فوری فیصلہ نہ کیا تو تجارتی مال کی کلیئرنس دوسرے صوبوں کو منتقل ہوجائے گی ، تجارتی مال وہیں سے ملک کے دیگر حصوں کو روانہ کردیا جائے گا جس سے پنجاب کو بھاری معاشی نقصان ہوگا، نہ صرف صرف کلیئرنگ ایجنٹس ،ٹرانسپورٹیشن کمپنیاں اور ا±ن کے ہزاروں ملازمین ب±ری طرح متاثر ہونگے بلکہ پنجاب کو ملنے والا ریونیو دیگر صوبوں میں منتقل ہوجائے گا۔