ناکافی سہولیات، آم کے برآمدی ہدف کے حصول میں مشکلات درپیش ہیں: احمد جواد

ناکافی سہولیات، آم کے برآمدی ہدف کے حصول میں مشکلات درپیش ہیں: احمد جواد

اسلام آباد (اے پی پی)ارویسٹ ٹریڈنگ کے چیف ایگزیکٹو آفیسر احمد جواد نے کہا ہے کہ رواں سیزن کے دوران فضائی کمپنیوں کی جانب سے برآمد کنندگان کو ناکافی جگہ کی فراہمی اور لاہور و کراچی ائیر پورٹس پر آم کو ذخیرہ کرنے کی ناکافی سہولتوں کی وجہ سے آم کے برآمدی ہدف کا حصول دشوار ہو جائیگا۔ اتوار کو اپنے ایک انٹرویومیں انہوں نے کہاکہ رواں سال کیلئے آم کا برآمدی ہدف ایک لاکھ 75ہزار ٹن مقرر کیا گیا ہے جبکہ مختلف فضائی کمپنیوں کی جانب سے زیادہ گنجائش نہ ملنے کی وجہ سے برآمدات متاثر ہو رہی ہےں۔ انہوں نے کہاکہ اگر پرواز بارہ گھنٹے سے زائد تاخیر کا شکار ہو جائے تو آم کا معیار بری طرح متاثر ہوتا ہے۔ اس لیے ضروری ہے کہ لاہور اور کراچی میں پروازوں کی تاخیر کے باعث آم کے نقصان سے بچنے کیلئے سٹوریج کی سہولیات فراہم کی جائیں۔ احمد جواد نے کہاکہ مختلف ممالک کے اپنے درآمدی قوانین ہوتے ہیں جبکہ نئے برآمد کنندگان کو قانون سے مکمل آگاہی نہ ہونے کی وجہ سے بھی برآمدات میں تاخیر ہوتی ہے۔ انہوں نے کہاکہ رواں سیزن میں آم کی 1.5ملین ٹن کی بھر پور پیداوار متوقع ہے۔ پاکستان انفراسٹرکچر کی سہولیات میں اضافہ کے ذریعے مجموعی ملکی پیداوار کا 25فیصد آم برآمد کر کے قیمتی زرمبادلہ کما سکتا ہے جس سے ملکی معیشت پر مثبت اثرات مرتب ہونگے۔