بنکوں کا مزید 27 ارب دینے سے انکار‘ گندم کی خریداری سست پڑ گئی‘ کسان پریشان

لاہور (معین اظہر سے) پنجاب حکومت کے پاس گندم کی خریداری کی رقوم ختم ہوجانے اور بنکوں نے 60 لاکھ ٹن گندم کی خریداری کو پورا کرنے کے لئے مزید 27 ارب کی رقم دینے سے انکار کردیا ہے ۔ جبکہ ابھی تک بنکوں نے وعدہ کئے گئے 11 ارب روپے جاری نہیں کئے ہیں جس سے گندم کی خریداری چالیس لاکھ ٹن سے زیادہ آگے نہیں جاسکی ہے اور کسانوں کو رقم دینے کا عمل بھی سست ہوگیا ہے جس کی وجہ سے ایک مرتبہ پھر سمگلر مختلف شہروں میں گندم خرید رہے ہیں۔ تاہم پنجاب کے پاس اس وقت 30 لاکھ گندم ذخیرہ کرنے کے انتظامات ہیںاور مہنگے گودام خریدنے سے گندم کی کاسٹ میں مزید اضافہ ہوجائے گا۔پنجاب حکومت نے 10 لاکھ ٹن گندم ایکسپورٹ کرنے کا جو اعلان کیا تھا اس پرایک تو وفاقی حکومت نے اعتراضات لگا دئیے ہیں دوسرا کوئی بین الاقوامی خریدار گندم مہنگی ہونے کی وجہ سے نہیں مل رہا۔تفصیلات کے مطابق حکومت پنجاب کو 60 لاکھ ٹن گندم خریدنے کے ایک کھرب50 ارب ، 75 کڑور ، 50 لاکھ روپے کی ضرورت تھی حکومت نے 1 کھرب 12 ارب56 کڑور ، 80 لاکھ روپے اپنے پاس سے اکٹھے کئے تھے اور ابتدائی طور پر چونکہ کم اہداف مقرر کئے تھے اسلئے ان کے مطابق اس وقت پنجاب کو 11 ارب روپے کی ضرورت تھی تو بنکوں سے یہ رقم کے مل جائے گی تو 48 لاکھ ٹن گندم خریدنے کے برابر رقم ہوگی مزید 12 لاکھ ٹن گندم خریدنے کے لئے پنجاب کو 27 ارب کی ضرورت ہے جس پر بنکوں سے اس رقم کی بات چیت کی گئی تھی فوڈ ڈیپارٹمنٹ اور محکمہ خزانہ کے ذرائع نے بتایا ہے کہ اضافی رقم بنکوں نے دینے معذرت کر لی ہے۔ اب سنٹروں پرروزانہ کاشتکار آرہے ہیں سست رفتار ہونے کی وجہ سے وہ پریشانی کا شکار ہوگئے ہیں اور مارکیٹ میں بلیک مارکیٹر اور سمگلروں نے کم ریٹ پر گندم کی خریداری شروع کر دی ہے۔ محکمہ خوراک کے ذرائع نے بتایا ہے کہ اس وقت فوڈ ڈیپارٹمنٹ کے پاس 30 لاکھ ٹن گندم ذخیرہ کرنے کی گنجائش ہے ۔3 لاکھ ٹن گندم ذخیرہ کرنے کی پرائیوٹ طور پر گنجائش حاصل کی گئی ہے ۔ 20 لاکھ ٹن گندم کو اوپن طور پر ذخیرہ کرنے کی پلاننگ کی جارہی ہے۔ ذرائع نے بتایا ہے کہ گزشتہ دس سالوں میں دوسری مرتبہ اتنی زیادہ پرچیز کی جارہی ہے ۔ 2000 میں 63 لاکھ ٹن گندم پرچیز کی گئی تھی جس کے بعد اس سال تقریبا 86 ملازمین اور افسران کے خلاف گندم خورد برد کرنے کے کیس رجسٹرڈ کئے گئے تھے ۔ اس کے بعد 2001 سے 2008 تک 25 لاکھ ٹن گندم خریداری کی جاتی رہی ہے لیکن اس 9 سال بعد اتنی زیادہ خریداری کی جارہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ 6 مئی کو 2 لاکھ 29 ہزار ٹن گندم خریدی گئی تھی ، 7 مئی 2 لاکھ ٹن 45 ہزار ٹن گندم خریدی گئی تھی لیکن 16 مئی کو گندم مارکیٹ میں 2لاکھ 46 ہزار ٹن موجود تھی لیکن سنٹروں نے 1 لاکھ سے بھی کم خریداری کی ہے۔
گندم خریداری