شرح سود کم نہ ہونے سے تیزی کے اثرات زائل: سٹاک مارکیٹ میں شدید مندا‘ سرمایہ کاروں کو 83 ارب روپے سے زائد خسارہ

شرح سود کم نہ ہونے سے تیزی کے اثرات زائل: سٹاک مارکیٹ میں شدید مندا‘ سرمایہ کاروں کو 83 ارب روپے سے زائد خسارہ

کراچی ‘ لاہور ( مارکیٹ رپورٹر ‘ کامرس رپورٹر ) سٹاک ایکسچینج میں شدید مندا رہااور کے ایس ای 100انڈیکس 27100,2700,26900 اور 26800 کی نفسیاتی حدوں سے بیک وقت گرگیا ۔ سرمایہ کاری مالیت میں 83 ارب51 کروڑروپے سے زائدکی کمی ہوئی۔اتاہم  مخصوص حصص کی قیمتوں میں خریداری کے باعث مارکیٹ میں ریکوری آئی اور  کے ایس ای 100 انڈیکس 27200 پوانٹس کی نفسیاتی حد ایک بارپھر عبور کرگیا۔ شرح سود کم نہ ہونے سے  مایوسی کے باعث تیزی کے اثرات زائل ہوگئے اور مارکیٹ کے اختتام پر کے ایس ای 100انڈیکس 383.03 پوائنٹس کمی  سے 26765.49 پوائنٹس پر بند ہوا۔ سرمایہ کاری مالیت میں 83 ارب51 کروڑ 85 لاکھ 58 ہزار 452 روپے کی کمی ریکارڈ کی گئی جبکہ سرمایہ کاری کی مجموعی مالیت گھٹ کر 64 کھرب 60 ارب61 کروڑ 55 لاکھ 84 ہزار 495 روپے ہوگئی ۔ دریں اثنا لاہور سٹاک ایکسچینج میں بھی مندا رہا۔  90 کمپنیوں کا کاروبار ہوا۔ 14 کمپنیوں کے حصص میں اضافہ  ہوا ‘ 24 کمپنیوں کے حصص میں کمی ہوئی جبکہ 52 کمپنیوں کے حصص میں استحکام رہا۔ ایل ایس ای 25 انڈیکس 37.61 پوائنٹس کی کمی کے ساتھ 5067.81 پر بند ہوا۔ 7 لاکھ 99 ہزار حصص کا کاروبار ہوا۔