معاشی مسائل حل کرنے کیلئے متفقہ ایجنڈا 2010-30ءاشد ضروری ہے : لاہور چیمبر آف کامرس

لاہور (نیوز رپورٹر) لاہور چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری کے صدر ظفر اقبال چودھری نے کہا ہے کہ ملک کے معاشی مسائل حل کرنے کے لیے ایک متفقہ قومی معاشی ایجنڈا 2010-30ءاشد ضروری ہے جس سے پالیسیوں کے تسلسل اور معاشی پالیسیوں کو سیاسی اثرات سے بالاتر رکھنے میں مدد ملے گی۔ وہ گزشتہ روز لاہور چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری میں سٹینڈنگ کمیٹیوں کے کنوینرزاور معاون کنوینرز کے ایک بڑے اجلاس سے خطاب کررہے تھے۔ اجلاس میں سو سے زائد کنوینرز اور معاون کنوینرز نے شرکت کی جبکہ لاہور چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری کے سابق صدور بشیر اے بخش، میاں شفقت علی اور سابق نائب صدر عرفان اقبال شیخ نے بھی اس موقع پر خطاب کیا۔ ظفر اقبال چودھری نے اجلاس کے شرکاءکو آگاہ کیا کہ لاہور چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری ایف پی سی سی آئی ،دیگر چیمبرز آف کامرس اینڈ انڈسٹری اور تجارتی تنظیموں کی مشاورت سے ایک شیڈو بجٹ تیار کرے گا جس کا مقصد حکومت کو معاشی بحالی کے لیے مدد فراہم کرنا ہے۔ انہوں نے کہا کہ وفاقی بجٹ 2010-11ءکے لیے تمام سٹینڈنگ کمیٹیوں کی مدد سے تجاویز اکٹھی کی جارہی ہیں جو جلد ہی حکومت کو ارسال کردی جائیں گی۔ لاہور چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری کے ممبران کے لیے ایمنسٹی سکیم کے اجراءکے متعلق ظفر اقبال چودھری نے کہا کہ اس کے لیے 31مارچ 2010ءآخری تاریخ مقرر کی گئی ہے لہذا سٹینڈنگ کمیٹیوں کے کنوینرز اور معاون کنوینرز اُن ممبران کو اِس سکیم سے فائدہ اٹھانے پر آمادہ کریں جنہوں نے اپنی ممبر شپ کی توثیق نہیں کرائی۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان واٹر فرنٹ کا قیام بھارت کا اصل چہرہ دکھانے کے لیے عمل میں لایا گیا تھا جو پاکستان کے خلاف آبی جارحیت کرکے اسے تباہ کرنے کے درپے ہے۔ انہوں نے کہا کہ بھارت صرف پاکستان ہی نہیں بلکہ چین، بنگلہ دیش اور نیپال کےخلاف بھی ایسی ہی سازشوں میں مصروف ہے۔
انہوں نے کہا کہ پاکستان واٹر ورنٹ لاہور چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری کے سابق نائب صدر شہزاد علی ملک کی سربراہی میں اپنا کام بخوبی کر رہا ہے۔ قومی معاشی ایجنڈا 2010-30ءکے بارے میں لاہور چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری کے صدر نے کہا کہ اس کا مقصد وسائل سے بھرپور فائدہ اٹھانے کے راستے تلاش کرنا ہے تاکہ معیشت مستحکم ہو، عوام خوشحال ہوں۔