افغانستان کیلئے پاکستانی برآمدات میں ایک چوتھائی کمی، وزارت تجارت کا اعتراف

افغانستان کیلئے پاکستانی برآمدات میں ایک چوتھائی کمی، وزارت تجارت کا اعتراف

اسلام آباد( آن لائن) افغانستان اور پاکستان کے درمیان بڑھتے ہوئے عدم اعتماد اور جنگ سے متاثرہ ملک سے نیٹو افواج کے انخلاءکے باعث افغانستان کے لیے پاکستان کی برآمدات میں 27 فیصد تک کمی واقع ہوئی ہے۔ حکام کے مطابق پاکستانی برآمدات میں کمی کا ایک اہم عنصر پچھلے چند ماہ میں افغانستان میں امن و امان کی ابتر صورتحال بھی ہے۔ پہلی مرتبہ پاکستان کی وزارت تجارت نے اعتراف کیا ہے کہ پاک افغان سرحد کی مسلسل بندش سے بھی پاکستان کی برآمدات میں کمی کا باعث رہی ہیں جبکہ ان برآمدات میں کمی کی ایک اور وجہ افغانستان کی تجارت کا رخ پاکستان سے ہٹ کر ایران کی طرف ہوجانا بھی ہے۔پاکستان کی افغانستان کو برآمدات سال 2011-2010 میں 2 ارب 40 کروڑ ڈالر کی ریکارڈ سطح تک پہنچ گئی تھی جبکہ اس سے اگلے دو برس تک 2 ارب ڈالر سالانہ رہی جس کے بعد 2015-2016 میں ان برآمدات میں کمی واقع ہوئی اور برآمدات کم ہوکر 1 ارب 43 کروڑ ڈالر ہوگئیں۔ موجودہ مالی سال کے پہلے سہ ماہی میں 36 کروڑ 25 لاکھ ڈالر کی برآمدات ہوئیں ہیں جس سے اندازہ لگایا جارہا ہے کہ مالی سال کے اختتام تک برآمدات 1 ارب ڈالر تک ہی ہو سکیں گی۔

افغانستان/ برآمدات