رواں مالی سال کی پہلی سہ ماہی کے دوران جاری حسابات کا خسارہ سو فیصد بڑھ کر ایک ارب ڈالر سے بھی تجاوز کر گیا۔

رواں مالی سال کی پہلی سہ ماہی کے دوران جاری حسابات کا خسارہ سو فیصد بڑھ کر ایک ارب ڈالر سے بھی تجاوز کر گیا۔

اسٹیٹ بینک کے جاری کردہ اعداد و شمار کے مطابق جولائی سے ستمبر کے دوران جاری حسابات کا خسارہ ایک ارب بیس کروڑ نوے لاکھ ڈالر پرپہنچ گیا جو گزشتہ سال اسی عرصے کے مقابلے میں اکسٹھ کروڑ بیس لاکھ ڈالر زائد ہے۔اسٹیٹ بینک رپورٹ کے مطابق صرف اگست کے مہینے میں جاری حسابات کا خسارہ بیس کروڑ دس لاکھ ڈالر رہا۔معاشی ماہرین کا کہنا ہے کہ تجارتی خسارے میں اضافہ اور غیر ملکی سرمایہ کاری میں نمایاں کمی کے باعث جاری حسابات کا خسارہ ایک ارب سے تجاوز کیا۔