کراچی سٹاک مارکیٹ‘ ایک ہفتہ کے دوران سرمایہ کاری میں 45 ارب سے زائد اضافہ

کراچی سٹاک مارکیٹ‘ ایک ہفتہ کے دوران سرمایہ کاری میں 45 ارب سے زائد اضافہ

کراچی (مارکیٹ رپورٹر) کراچی سٹاک مارکیٹ نے گذشتہ ہفتہ تمام سابقہ ریکارڈ کو توڑتے ہوئے ایک اور نیا ریکارڈ قائم کر دیا،کے ایس ای 100انڈیکس 33953 پوائنٹس کی بلند ترین سطح کو چھونے بعد 33786پوائنٹس کی تاریخی سطح پر بند ہوا۔ کاروباری تیزی کے سبب مارکیٹ کے سرمائے میں 45ارب سے زائد روپے کا اضافہ ریکارڈ کیا گیا جس کے نتیجے میں سرمائے کا مجموعی حجم 77 کھرب روپے سے تجاوز کرگیا۔ گزشتہ ہفتہ کراچی اسٹاک مارکیٹ میں کاروبار کا  آغاز مثبت ہو ااور پہلے روز ہی انڈیکس 33418 پوائنٹس کی ریکارڈ سطح پر پہنچ گیا تاہم دوسرے روز منافع خوری کی خاطر فروخت کے دبائو نے مارکیٹ کو منفی زون میں رکھا اور انڈیکس 33371 پوائنٹس پر واپس آگیا بعد ازاں بدھ کے روز سے رونما ہونے والی تیزی کا سلسلہ جمعہ تک برقرار رہا۔ سرمایہ کاروں کے مطابق نتائج سیزن کاآغاز جنوری کے اختتام سے شروع ہو رہا ہے جبکہ بینکنگ سیکٹر کے سالانہ اچھے مالیاتی نتائج کے توقعات اور شرح سود میں آدھے سے 1 فیصد متوقع کمی کی وجہ سے نہ صرف مارکیٹ میں تیزی دیکھی جارہی بلکہ اس سے سیمنٹ ، ٹیکسٹائل اورپاور سیکٹر کو بھی مزید تقویت مل رہی ہے ۔ سرمایہ کاروں کے مطابق عالمی مارکیٹ میں تیل کی قیمتوں میں استحکام کی وجہ سے مقامی آئل اینڈ گیس کے حصص سرمایہ کاروں کی توجہ کا مرکز بنے ہوئے ہیں ،زرمبادلہ کے ذخائر  میں اضافے اورفی الوقت کی سیاسی صورتحال مارکیٹ کو مثبت رکھنے میںاہم کردار ادا کر رہی ہے اور امید کی جارہی ہے کہ عالمی مارکیٹ تیل کی گرتی قیمتیں مارکیٹ کومثبت رکھ سکتی ہے کوئلے کی قیمتوں میں کمی سے سیمنٹ سیکٹر کے مارجن میں بہتری کی توقعات نمایاں ہونے سے سیمنٹ سیکٹر کے حصص کی خریداری بھی معمول سے زیادہ ہے۔اسٹاک تجزیہ کاروں کے مطابق رزلٹ سیزن کے آغاز، کمپنیوں کے بہتر مالی نتائج اور شرح سود میں متوقع کمی وہ عوامل ہیں جو بازار حصص کو مسلسل اْوپر لے جارہے ہیںاگر صورتحال جوں کی توں رہی تو نئے کاروباری ہفتہ میں کے ایس ای 100 انڈیکس 34ہزار پوائنٹس کی سطح بھی عبور کر سکتا ہے۔