لیسکو کے شکایات سیل غیر فعال‘ امراءکے بل غریبوں کے کھاتے ڈالنا معمول بن گیا

لیسکو کے شکایات سیل غیر فعال‘ امراءکے بل غریبوں کے کھاتے ڈالنا معمول بن گیا

لاہور (نیوز رپورٹر) لیسکو حکام کی عدم توجہ اور افسران کی بروقت منصوبہ بندی نہ ہونے سے بجلی چوری بڑھ گئی لیسکو کی سا¶تھ سرکل (پانچویں سرکل) میں لائن لاسز کی شرح میں اضافے کی وجہ سے کرپٹ صارفین کی موجیں جبکہ غریب صارفین کی کئی گنا زائد بل بھجوانا افسران اور ملازمین کا معمول بن گیا۔ تفصیلات کے مطابق لیسکو کی سا¶تھ سرکل جس میں پوش آبادیاں، نئی ہا¶سنگ کیمپس، پرانے اور کمرشل صارفین کی بھرمار ہے ڈیفنس ڈویژن، گلبرگ ڈویژن اور صدر ڈویژن نے بعض پوش علاقوں کے صارفین اور کمرشل صارفین زیادہ بجلی استعمال کرکے کم بل محکمے کو دے رہے ہیں اور کروڑوں روپے ماہانہ قومی خزانے کو نقصان پہنچا رہے ہیں۔ وہیں ان کے استعمال کی بجلی غریب علاقوں پر بجلی بناکر گرتی ہے بعض علاقے ایسے بھی ہیں جہاں پر 30 کے قریب کمرشل پلازوں میں بجلی کئی سال سے استعمال ہو رہی تھی مگر اس کی بلنگ نہیں ہو سکی تھی یہ قصہ بھی لیسکو ہیڈ آفس میں زبان زد عام تھا دوسری طرف سا¶تھ سرکل کی تمام سب ڈویژنز میں صارفین کی شکایات کے فوری ازالے کیلئے کمپلینٹ سیل مکمل فعال نہیں اوور بلنگ، بجلی چوری کے حوالے سے ایماندار صارفین سراپا احتجاج ہیں انہوں نے چیف ایگزیکٹو لیسکو انجینئر محمد سلیم سے اس صورتحال کا نوٹس لینے اور ذمہ داران کے خلاف کارروائی کا مطالبہ کیا ہے اس حوالے سے جب ایس ای سا¶تھ سرکل رانا اسمعیل سے ان کے سرکاری موبائل (03147171500) پر رابطہ کیا گیا تو انہوں نے کہا کہ میں ڈرائیونگ کر رہا ہوں درباری رابطے پر انہوں نے کہا کہ میں کسی دعوتی میں شریک ہوں اس مسئلے پر بات نہیں کر سکتا ۔ لیسکو کے اعلیٰ حکام نے بتایا کہ تمام افسران کو ہدایات دی گئیں ہیں کہ اوور بلنگ نہ کی جائے۔ صارفین کے مسائل فوری حل کئے جائیں۔ اس قسم کی شکایات کا نوٹس لیا جائے گا۔