حکومت پرتعیش اشیاءکی درآمد بند، کوئلہ و ہائیڈل پاور پراجیکٹ لگائے: خورشید احمد

لاہور (پ ر) واپڈا و محکمہ بجلی کے کارکنوں نے آل پاکستان واپڈا ہائیڈرو الیکٹرک ورکرز یونین سی بی اے کے زیراہتمام ضروریات زندگی کی اشیاءمیں روزافزوں کمرتوڑ مہنگائی کے خلاف احتجاجی جلوس نکالا اور ذخیرہ اندوزوں و ناجائز منافع خوروں کی لوٹ کھسوٹ کے خلاف زبردست احتجاج کیا جنہوں نے ماہ رمضان المبارک کی آمد پر سبزیوں، پھلوں اور خوردونوش کی تمام اشیاءکی قیمتیں کم کرنے کی بجائے 20 سے 30 فیصدی بڑھا دی ہیں اور حکومت خاموش تماشائی بنی ہوئی ہے۔ مظاہرین نے واپڈا اتھارٹی اور محکمہ بجلی سے مطالبہ کیا کہ یونین کے پیش کردہ چارٹر آف ڈیمنڈ کے مطابق کارکنوں کے جائز مسائل حل کریں اور اکا¶نٹس اینڈ آڈٹ عملہ کے پے سکیلز حکومتی اداروں و سپریم کورٹ کے فیصلہ کے مطابق واپڈا اتھارٹی اور پیپکو انتظامیہ ان پر جلد عمل کرائے۔ یہ جلوس بزرگ مزدور رہنما خورشید احمد کی قیادت میں بختیار لیبر ہال لاہور سے ہوتا ہوا لکشمی چوک پہنچا۔ مظاہرین نے ان مطالبات کی حمایت میں وزیراعظم پاکستان سے مطالبہ کیا کہ وہ لوڈشیڈنگ کے خاتمہ کیلئے شام آٹھ بجے کمرشل سنٹر بند کرائیں، سستی بجلی پیدا کرنے کیلئے بند پاور ہا¶سز چلائیں اور تعیش کی اشیاءکی درآمدات بند کرا کر نئے ہائیڈل و کوئلہ کے تھرمل پاور سٹیشن قائم کرے۔