پٹرولیم قیمتوں‘ جی ایس ٹی میں اضافے سے کاروبار پر منفی اثرات‘ سٹاک مارکیٹوں میں مندا‘ سرمایہ کاروں کے 51 ارب 98 کروڑ ڈوب گئے

پٹرولیم قیمتوں‘ جی ایس ٹی میں اضافے سے کاروبار پر منفی اثرات‘ سٹاک مارکیٹوں میں مندا‘ سرمایہ کاروں کے 51 ارب 98 کروڑ ڈوب گئے

کراچی+لاہور(مارکیٹ رپورٹر+کامرس رپورٹر ) کراچی اسٹاک ایکسچینج میں ہفتے کے آخری روز مندی پر کے ایس ای 100 انڈیکس 216.08 پوائنٹس کمی پر 22600‘ 22700 کی دو نفسیاتی حدیں برقرار نہ رکھ کر 22541.64 کی نچلی سطح پر پہنچ گیا سرمایہ کاری مالیت میں 51 ارب 98 کروڑ روپے سے زائد کمی کے باعث کاروبار میں مندی کا رحجان رہا تفصیلات کے مطابق حکومت کے پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتیں بڑھانے‘ جی ایس ٹی میں ایک فیصد اضافہ‘ آئی ایم ایف کے قرضے کی ادائیگی کا خسارہ‘ خریداروں کی عدم دلچسپی اورکاروباری حجم میں 48.84کروڑ حصص کے سودوں میں قدرے اضافے کے باعث سرمایہ کاروں نے موجودہ حالات میں محتاط ہوکر بیشتر حصص اونے پونے فروخت کرکے اپنی جمع پونجی کے انخلاء میں سرگرداں رہے جس کے نتیجے میں کے ایس ای 100انڈیکس 216.08 پوائنٹس کمی پر 22541.64 کی نچلی سطح پر آگیا سرمایہ کاری میں 51 ارب 98کروڑ 25 لاکھ 48 ہزار581 روپے کمی پر مجموعی سرمایہ کاری گر کر54 کھرب 59 ارب 56 کروڑ 22 لاکھ 816 ہزار19روپے رہ گئی اس طرح سرمایہ کاروں کو 51 ارب 98 کروڑ روپے سے زائد خسارہ رہا لاہور سٹاک ایکسچینج میں جمعہ کے روزمندی کا رجحان رہا - مجموعی طور پر87کمپنیوں کا کاروبارہوا۔ 22 کمپنیوں کے حصص میں اضافہ۔ 31 کمپنیوں کے حصص میں کمی جبکہ 34 کمپنیوں کے حصص میں استحکام رہا۔ ایل ایس ای 25 انڈیکس 41.12 پوائینٹس کی کمی کے ساتھ 4702.94 پربندہوا۔