الطاف کی پیشی، ضمنی الیکشن کے باعث کشیدگی: سٹاک مارکیٹ میں شدید مندا، کے ایس ای 100 انڈیکس 32200 پوائنٹس کی نفسیاتی حد سے گر گیا

الطاف کی پیشی، ضمنی الیکشن کے باعث کشیدگی: سٹاک مارکیٹ میں شدید مندا، کے ایس ای 100 انڈیکس 32200 پوائنٹس کی نفسیاتی حد سے گر گیا

کراچی +لاہور(مارکیٹ رپورٹر+کامرس رپورٹر) کاروباری ہفتے کے دوسرے روز منگل کو بھی اتار چڑھاؤ کے کراچی سٹاک ایکسچینج میں مندا رہا اور کے ایس ای 100انڈیکس 32200کی نفسیاتی حد سے گرگیا ۔سرمایہ کاری مالیت میں29ارب46کروڑ روپے سے زائد کی کمی ہوئی۔ تفصیلات کے مطابق حکومتی مالیاتی اداروں، مقامی بروکریج ہاؤسز اور دیگر انسٹی ٹیوشنز کی جانب سے سیمنٹ ،توانائی اور بینکنگ سیکٹر میں خریداری کے باعث کاروبار کا آغاز مثبت زون میں ہوا ۔ٹریڈنگ کے دوران ایک موقع پر کے ایس ای 100انڈیکس 32285پوائنٹس کی بلند سطح پر بھی ریکارڈ کیا گیا ۔تاہم لندن میں ایم کیو ایم کے قائد الطاف حسین کی منی لانڈرنگ کیس میں پیشی کے باعث سرمایہ کار تذبذب کا شکار نظر آئے اور انہوں نے اپنے حصص فروخت کرنے کے ترجیح دی جس کے باعث تیزی کے اثرات زائل ہو گئے۔ اقتصادی ماہرین کے مطابق لندن میں ایم کیو ایم کے قائد الطاف حسین سے منی لانڈرنگ کیس میں تفتیش اور 23اپریل کو کراچی میں ہونے والے ضمنی انتخاب کے حوالے سے سیاسی کشیدگی نے کے باعث سرمایہ کار اپنے حصص فروخت کرنے کو ترجیح دے رہے ہیں جس کے باعث مارکیٹ میں مندا رہا ہے۔ مارکیٹ کے اختتام پر کے ایس ای 100انڈیکس138.58پوائنٹس کمی سے 32109.87 پوائنٹس پر بند ہوا۔ دریں اثناء لاہور سٹاک ایکسچینج میں بھی مندے کا رجحان رہا -مجموعی طور پر85کمپنیوں کے حصص میں کاروبارہوا۔7 کمپنیوں کے حصص میں اضافہ ہوا۔ 14کمپنیوں کے حصص میں کمی ہوئی جبکہ 64 کمپنیوں کے حصص میں استحکام رہا۔ایل ایس ای 25انڈیکس 30.88 پوائنٹس کی کمی کے ساتھ 5478.79 بند ہوا۔ 17 لاکھ 97 ہزار 600 حصص کا کاروبار ہوا۔