ڈیرہ دون کا ’’ننھا بل گیٹس‘‘آٹھ سالہ رحمان کمپیوٹر اینیمیشن میں مہارت حاصل کرنے کے بعد اس کی تعلیم دے رہا ہے

ڈیرہ دون کا ’’ننھا بل گیٹس‘‘آٹھ سالہ  رحمان کمپیوٹر اینیمیشن میں مہارت حاصل کرنے کے بعد اس کی تعلیم دے رہا ہے

ڈیرہ دون (بی بی سی نیوز) ریاست اتر اکھنڈ کے شہر ڈیرہ دون سے تعلق رکھنے والے امان رحمان نے تین برس کی عمر سے کمپیوٹر کا استعمال شروع کیا تھا اور وہ اب تک ایک ہزار سے زائد اینیمیٹڈ فلمیں بنا چکے ہیں۔ جب آپ ڈیرہ دون پہنچیں اور امان کے بارے میں معلوم کریں تو ایسا لگتا ہے کہ شہر کا ہر فرد‘ کمپیوٹر والے بچے‘ کو جانتا ہے‘ انہیں شہر بھر میں ’’ننھے بل گیٹس‘‘ کے نام سے جانا جاتا ہے۔ امان کے والد جو کہ پیشے کے لحاظ سے ایک موٹر سائیکل مکینک ہیں‘ کہتے ہیں کہ انہوںنے ابتدا میں اپنے بیٹے کی اس صلاحیت پر توجہ نہیں دی۔ اپنے دوستوں کے کہنے پر میں نے اسے کچھ کمپیوٹر ماہرین سے بھی ملوایا مگر انہوں نے بھی اس کے کام کو سنجیدگی سے نہ لیا۔ تاہم اس کے بعد امان کے والد کی مسلسل درخواستوں پر ڈیرہ دون کالج آف انٹرایکٹو آرٹس کے حکام نے امان کی کمپیوٹر صلاحیتوں کا جائزہ لینے کا فیصلہ کیا اور اس کی صلاحیتوں کو دیکھتے ہوئے اسے اپنے ہاں داخلہ دے دیا۔ کالج میں امان نے ایک ماہ کے اندر اپنا پہلا کمپیوٹر پروگرام لکھا اور اینیمیشن کا پندرہ ماہ پر مشتمل کورس تین ماہ ہی میں مکمل کرلیا۔