حکومت ٹیکسٹائل سیکٹر کو تباہی سے بچانے کیلئے فوری اقدامات کرے: طاہر جاوید

حکومت ٹیکسٹائل سیکٹر کو تباہی سے بچانے کیلئے فوری اقدامات کرے: طاہر جاوید

لاہور(کامرس رپورٹر) لاہور چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری کے سینئر نائب طاہر جاوید ملک نے حکومت کے معاشی مینیجرز پر زور دیا ہے کہ ٹیکسٹائل سیکٹر کی بندش کے معاملے کو سنجیدگی سے لیتے ہوئے اسے تباہی سے بچانے کے لیے فوری اقدامات اٹھائیں۔ وہ گذشتہ روز لاہور چیمبر آف کامرس میں ٹیکسٹائل سیکٹر سے وابستہ صنعتکاروں سے گفتگوکررہے تھے۔ لاہور چیمبر کی سٹینڈنگ کمیٹی برائے ٹیکسٹائل کے کنوینر طارق محمود، چیئرمین آل پاکستان ٹیکسٹائل ملز ایسوسی ایشن پنجاب اکبر شیخ ، لاہور چیمبر کی ایگزیکٹو کمیٹی کے سابق اراکین وصال منوںاور شفیق ریاض نے بھی اس موقع پر خطاب کیا۔ طاہر جاوید ملک نے کہا کہ حکومت بینکوں کو ٹیکسٹائل انڈسٹری سے مارک اپ وصول نہ کرنے کی ہدایت کرے کیونکہ یہ پیداواری عمل رک جانے کی وجہ سے یہ انڈسٹری مارک اپ ادا کرنے کے قابل نہیں ہے۔ انہوں نے حکومت پر زور دیا کہ پاکستانی ٹیکسٹائل مصنوعات کی یورپ اور امریکہ کی مارکیٹوں تک ڈیوٹی فری رسائی کو یقینی بنانے کے لیے اقدامات اٹھائے۔ جس سے ٹیکسٹائل انڈسٹری کے بحران کی شدت کم کرنے میں مدد ملے گی۔ انہوں نے کہا کہ ملکی تاریخ میں پہلی مرتبہ کُل برآمدات میں ٹیکسٹائل سیکٹر کا حصّہ ساٹھ فیصد سے زائد ہوا ہے جبکہ کُل مینوفیکچرنگ میں اس کا حصّہ چھیالیس فیصد اور روزگار کی فراہمی میں اس کا حصّہ اڑتیس فیصد ہے۔ انہوں نے کہا کہ ٹیکسٹائل سیکٹر سے وابستہ افرادی قوت شدید مشکلات سے دوچار ہے لہذا حکومت ہنگامی پیکیج کا اعلان کرے۔ انہوں نے کہا کہ بجلی اور گیس کی بے تحاشا لوڈ شیڈنگ، زیادہ مارک اپ اور زیادہ پیداواری لاگت کی وجہ سے عالمی منڈی میں یہ دیگر کا ممالک کا کس طرح مقابلہ کرسکتی ہے؟