سارک ممالک کی تجارت بڑھانے کیلئے ٹھوس لائحہ عمل اختیار کرنا چاہیے : چیف ایگزیکٹو آفیسر سمیڈا

لاہور(  کامرس رپورٹر)  سمال اینڈ میڈیم انٹرپرائزز ڈویلپمنٹ اتھارٹی ’سمیڈا‘ کے چیف ایگزیکٹو آفیسر محمد عالمگیر چوہدری نے کہا ہے کہ سارک ممالک کے درمیان آپسمیں ہونے والی تجارت کا حجم  ، جنوبی ایشیا ء میں ہونے والی کل تجارت کے صرف چھ فیصدی حصے پر مشتمل ہے جسے بڑھانے کیلئے سارک کے تحت کام کرنے والی اقتصادی اور تجارتی ایجنسیوں کو ٹھوس لائحہئِ عمل مرتب کر نا چاہیے۔ یہ بات انہوں نے سارک کے ٹریڈ پروموشن نیٹ ورک  اور سمیڈا کے اشتراک سے منعقدہ ایک انسیپشن ورکشاپ سے خطاب کرتے ہوئے کہی۔ ورکشاپ کا مقصد سارک ممالک کے مابین ٹیکسٹائل وگارمنٹس کے شعبہ میں ویلیو چین کو فروغ دینا تھا۔ ورکشاپ سے سی بی آئی ، نیدر لینڈ ز کے عالمی ٹیکسٹائل ایکسپرٹ مسٹرکلدیپ شرما، فیڈریشن آف مائیکرو اینڈ سمال انٹرپرائزز ، انڈیا کے جوائینٹ سیکرٹری مسٹر وی این شاستری اور انکے مشیر ٹیکسٹائل مسٹر سمپتھ کسریجان نے بھی خطاب کیا۔