اتوار بازاروں میں سبزیوں اور پھلوں کی قلت کے باعث خریدار پریشان رہے

لاہور (خبر نگار) سانحہ داتا دربار اور سخت گرمی نے لاہور کے شہریوں کو اتوار کی صبح اتوار بازاروں سے دور رکھا۔ مگر دوپہر بارہ بجے چلنے والی آندھی کے بعد اتوار بازاروں میں خریداروں کی بڑی تعداد پہنچی مگر اتوار بازاروں کے دکانداروں کی طرف سے پھل اور سبزیاں کم لانے کا مسئلہ بھی خریداروں کے لئے پریشان کن رہا۔ سبزیوں کی قیمتوں میں گذشتہ اتوار کی نسبت نمایاں فرق دیکھنے میں آیا۔ مٹر‘ شملہ مرچ اتوار بازاروں سے غائب تھے جبکہ آلو ایک روپے اضافے سے 31‘ پیاز 1 روپے اضافہ سے 19‘ لہسن دیسی 10 روپے اضافے سے 140‘ مٹر 25 روپے اضافے سے 80‘ بھنڈی 9 روپے اضافے سے 24‘ شملہ مرچ 6 روپے اضافے سے 20‘ گھیا کدو 15 روپے اضافے سے 30‘ دیسی ٹینڈے 10 روپے اضافے سے 45‘ ادرک چائنہ 2 روپے اضافے سے 120‘ کھیرا دو روپے اضافہ سے 24‘ پھلیاں لوبیا 5 روپے اضافے سے 25‘ بینگن 12‘ بند گوبھی 14‘ پھول گوبھی 28‘ سبز مرچ 24‘ لیموں 58‘ اروی 25‘ شلجم 30 روپے کلو فروخت ہوئے جبکہ پھلوں میں سیب 42 سے 112‘ آم سہارنی 35‘ آم سندھڑی 40‘ آم دوسہری 55‘ آم چونسہ 60‘ آم انور رٹول 55‘ آم لنگڑا 28‘ آڑو 70‘ آلو بخارہ 70‘ خوبانی سفید 65‘ خوبانی موٹی 70‘ تربوز 15‘ فالسہ 80‘ الیچی 130‘ کھجور 120‘ گرما 28‘ انار دیسی 70‘ جامن 40‘ ناشپاتی 30‘ انگور سندر خانی 130‘ انگور گولہ 90 اور کیلا 25 سے 50 روپے درجن فروخت ہوا۔