پاور سیکٹر کو تیل کی فراہمی میں کمی، 18 گھنٹے تک لوڈ شیڈنگ، مظاہرے

پاور سیکٹر کو تیل کی فراہمی میں کمی، 18 گھنٹے تک لوڈ شیڈنگ، مظاہرے

لاہور(نیوز رپورٹر+نامہ نگاران) چھٹی کے باوجود اتوار کو ملک میں بجلی کی بدترین لوڈ شیڈنگ جاری رہی، شارٹ فال 4800 میگاواٹ سے تجاوز کر گیا تیل اور گیس کمپنیوں کو واجبات کی ادائیگی نہ ہونے پر پاور سیکٹر کو تیل کی فراہمی کم کر دی گئی۔ پی ایس او نے نجی اور این ٹی ڈی سی کو تیل کی سپلائی 15 ہزار میٹرک ٹن کم کی ہے۔ لاہور میں لوڈشیڈنگ کا دورانیہ 12 سے زیادہ گھنٹے ہوگیا ہے۔ دیہات میں 16 سے 18 گھنٹے کی لوڈ شیڈنگ کی جا رہی ہے۔ شور کوٹ سے نامہ نگار کے مطابق پریس کلب کے سامنے عوام نے ڈنڈا بردار جلوس نکالا۔ پیر محل سے نامہ نگار کے مطابق لوڈ شیڈنگ کے دورانیہ میں اضافے سے شہری بے حال ہوگئے۔لیسکو کے 21 سے زائد فیڈرز بھی بند رہے جس سے بجلی بندش کے دورانیے میں اضافہ ہوگیا۔ ڈونگہ بونگہ سے نامہ نگار کے مطابق 18 گھنٹوں کی لوڈ شیڈنگ نے لوگوں کا کاروبار تباہ کردیا۔ جہلم سے نامہ نگار کے مطابق چھٹی کے روز بھی شدید حبس کے دوران بجلی کی غیراعلانیہ لوڈ شیڈنگ کا سلسلہ جاری رہا۔ بھوئے آصل سے نامہ نگار کے مطابق لوڈ شیڈنگ کے باعث لوگ راتیں جاگ کر گزارنے پرمجبور ہیں۔ نارنگ منڈی سے نامہ نگار کے مطابق گھنٹوں لوڈ شیڈنگ پر انجمن طلبہ اسلام نے احتجاجی مظاہرہ کیا۔ بچیکی سے نامہ نگار کے مطابق ہر ایک گھنٹے بعد 4 گھنٹے کیلئے بجلی بند کردی جاتی ہے۔ پینے کے پانی کی بھی شدید قلت پیدا ہوگئی ہے۔