کسی ملزم کو بلاجواز برطرف نہیں کیاجاتا ہے:کے ای ایس سی

کسی ملزم کو بلاجواز برطرف نہیں کیاجاتا ہے:کے ای ایس سی

کراچی(اسٹاف رپورٹر)کے ای ایس سی کی جانب سے جاری کردہ اعلامیئے میں ایک بار پھر وضاحت کی گئی ہے کہ کمپنی اپنے کسی بھی ملازم کو بلاجواز برطرف نہیں کرتی اور نہ ہی کسی بھی ملازم کے ساتھ ناروا سلوک کیا جاتا ہے۔ لیبر یونیئن کے چند ممبران کی جانب سے کے ای ایس سی کے خلاف غلط بیان اور حقیقت سے دور بیانات کو اخبارات میں چھاپا گیا ہے۔ چند روز قبل انہی ملازمین نے کے ای ایس سی کے دفتر کے باہر احتجاج کیا تھا اور نعرے بازی کی تھی۔ کے ای ایس سی وضاحت کرنا چاہتی ہے کہ یہ وہی لیبر یونیئن کے افراد ہیں جنہوں نے چند سال قبل بھی کے ای ایس سی کے دفاتر پر حملے کئے تھے اور مختلف دفاتر کو نقصان پہنچایا تھا۔اعلامیئے میں اس بات کی بھی وضاحت کی گئی کہ برطرف ہونے والے ملازمین میں سے زیادہ تر پر کرمنل چارجز(Criminal Charges) لگے ہوئے ہیں ۔ یہ ملازم غنڈہ گردی کے ساتھ ساتھ کے ای ایس سی کے املاک کو نقصان پہنچانے میں بھی ملوث رہے ہیں۔ ادارہ کسی بھی بدعنوان ملازم کو ادارے کے ضابطے کی خلاف ورزی کرنے پر برطرف کرنے کا قانونی حق رکھتا ہے۔ ضابطے کی خلاف ورزی پر کسی بھی ملازم کو جواب دینے کا موقع دیا جاتا ہے اور تسلی بخش جواب نہ ملنے کی صورت میں باقائدہ انکوائیری کے بعد ہی اس کو برطرف کیا جاتا ہے۔