سپلائی بہتر ہونے سے سبزیوں کی قیمتوں میں نمایاں کمی‘ پھل بدستور مہنگے‘ حکومت نئے بازار لگانے کی بجائے پرانوں میں قیمتیں کنٹرول کرے: عوامی حلقے

سپلائی بہتر ہونے سے سبزیوں کی قیمتوں میں نمایاں کمی‘ پھل بدستور مہنگے‘ حکومت نئے بازار لگانے کی بجائے پرانوں میں قیمتیں کنٹرول کرے: عوامی حلقے

لاہور (خبر نگار) کھیت سے منڈیوں کو سبزیوں کی سپلائی بہتر ہوتے ہی سبزیوں کی قیمتوں میں کمی ہو گئی۔ مڈل مین کی طرف سے پیدا کردہ ناجائز  اضافہ  بھی سبزیوں کی سپلائی بہتر ہونے سے کم ہو گیا جب کہ پھلوں کی قیمتوں میں کمی کی بجائے قدرے اضافہ ہو گیا۔ اتوار بازاروں میں خریداری کرنے والے سبزیوں کی قیمتوں میں کمی سے خوش نظر آئے۔ مگر ان کا مطالبہ تھا کہ حکومت بدھ اور جمعہ بازار لگانے کی بجائے عام بازاروں میں قیمتیں کنٹرول کرے۔ گزشتہ روز آلو 16 روپے کمی سے 36، پیاز10 روپے کمی سے 45، ٹماٹر15روپے کمی سے 90، پالک15 روپے کمی سے 5، بینگن 5 روپے کمی سے 20، بند گوبھی 5 روپے کمی سے 30، مونگرے 20 روپے کمی سے 20، ماڑو 5 روپے کمی سے 20، پھول گوبھی 21 روپے کمی سے 14، ٹینڈیاں 20 روپے کمی سے 20 گھیا کدو 14 روپے کمی سے 16، مٹر 10 روپے کمی سے 50، شملہ مرچ 20 روپے کمی سے 80، سبزمرچ5 روپے کمی سے 50، اروی 5 روپے کمی سے 40، گاجر 2 روپے کمی سے 22، ساگ 10 روپے کمی سے 8، دھنیا20 روپے کمی سے 110روپے کلو ہو گیا جب کہ چائنہ/دیسی لہسن 10 روپے سے اضافے سے 120 اور ادرک چائنہ 10 روپے اضافے سے 180 روپے، کھیرا 5 روپے داضافہ سے 30 روپے کلو ہو گیا۔  پھلوں میں  اناربدانہ 30 روپے اضافہ سے 200، انگور ایرانی 50 روپے اضافے سے 200، امرود 10 روپے اضافے سے 50، مسمی درجن 5 روپے اضافہ سے 75، مالٹا شگری10 روپے اضافہ سے 65 روپے کلو اور کیلا 2 روپے اضافے سے 48 روپے درجن ہو گیا جب کہ سیب سفید 50، سیب میدانی 60، سیب پہاڑی100، سیب مشہدی50، سیب امری 40، انار قندھاری 160، شکرقندی40 روپے کلو فروخت ہوئی۔