غربت کے مارے ماں باپ بھوک سے بلکتے 3 بچے ماڈل ٹاؤن پارک چھوڑ گئے

غربت  کے  مارے  ماں  باپ  بھوک  سے  بلکتے  3   بچے  ماڈل  ٹاؤن  پارک    چھوڑ  گئے

لاہور (احسان شوکت سے) غربت اور بیروز گاری سے تنگ میاں بیوی اپنے تین بچوں کو نواز شریف پارک، ماڈل ٹاؤن میں ناشتہ لانے کا بہانہ بناکرلا وارث چھوڑ گئے اور واپس نہ آئے۔ ان بچوں میں تین سالہ آمنہ، پانچ سالہ صبا اور آٹھ سالہ علی رضا شامل ہیں۔ ریسکیو 1122 نے ان تینوں بہن بھائیوں کو چائلڈ پروٹیکشن بیورو کے حوالے کر دیا۔ تفصیلات کے مطابق ماڈل ٹاون میں تین معصوم بچوں کو روتا دیکھ کر ٹریفک وارڈن محمد عابد نے ان سے پوچھا کہ وہ کون ہیں تو انہوں نے بتایا کہ میرے امی ابو ہمیں یہاں چھوڑ گئے ہیں کہ تم بہنوں کا خیال رکھو ہم روٹی لے کر آتے ہیں۔ چاچو ہمیں بڑی بھوک لگی ہوئی ہے‘ آمنہ اور صبا مجھے بار بار پوچھ رہیں ہیں کہ امی روٹی لے کر کب آئیں گی‘ جس پر وارڈن نے ان کو کھانا کھلایا اور شام تک ان کے ماں باپ کا انتظار کیا مگر وہ نہ آئے جس پر ریسکیو حکام نے بچوں کو چائلڈ پروٹیکشن بیورو کے حوالے کر دیا۔ علی رضا، صبا اور آمنہ نے نوائے وقت کو بتایا کہ وہ اپنے والدین کے ساتھ نصیر آباد کے علاقہ میں واقع ڈاکٹر ظفر کے کلینک کے پاس رہتے ہیں۔ علی رضا نے بتایا کہ میر ے ابو محمد انور اور امی پروین بی بی لوگوں کے گھروں میں کام کرتے ہیں‘ میری بہن دودھ مانگتی تو امی رونے لگ جاتی تھی جبکہ پیسے نہ ہونے پر ابو امی سے بھی لڑتے رہتے تھے‘ میری اور بھی دو بہنیں ہیں جو کہ گھر میں ہیں‘ ہم نے گھر جانا ہے‘ مجھے میری امی بہت یاد آ رہی ہے۔