جنگ کسی صورت بھی دونوں ملکوں کے مفاد میں نہیں: امن مشن

لاہور (لیڈی رپورٹر) بھارتی عوام اور عوامی نمائندگان نے واشگاف الفاظ میں کہا ہے کہ اگر پاکستان نے اپنے معاملات درست نہ کئے اور بھارت میں ممبئی حملوں کی طرز پر مزید ایک واقعہ بھی رونما ہوا تو پاکستان کو اس کی بھاری قیمت چکانی پڑے گی اور چین سمیت پوری دنیا پاکستان پر تمام پابندیاں لگا کر پاکستان کو عالمی سطح پر تنہا کر دے گی‘ دہشت گردی پاکستان کی اولین دشمن ہے اور جنگ کسی صورت بھی دونوں ممالک کی عوام کے حق میں نہیں ہے۔ ایجنسیوں کو کنٹرول کرنے کی ضرورت ہے۔ حکومت ایسی پارلیمانی کمیٹی بنائے جس کو ایجنسیاں جوابدہ ہوں ۔ان خیالات کا اظہار امن مشن کے وفد نے بھارت سے واپسی پر پریس کانفرنس کرتے ہوئے کیا۔ اس موقع پر پاکستان ہیومن رائٹس کی چیئرپرسن عاصمہ جہانگیر، جنرل سیکرٹری آئی اے رحمان، سابق ممبر صوبائی اسمبلی ہارون شاہ، سینئر صحافی جگنو محسن، سیفما کے جنرل سیکرٹری امتیاز عالم، سلیمہ ہاشمی موجود تھے۔ عاصمہ جہانگیر نے کہا ہے کہ بھارتی عوام جنگ اور فوجی ایکشن کے حق میں نہیں ہے لیکن انہیں اس بارے میں فکر ضرور لاحق ہے کہ اگر پاکستان نے اپنے معاملات کو درست نہ کیا تو دہشت گردی کے چھینٹے ان پر بھی پڑیں گے۔جس سے جنگ ناگریز ہو جائے گی۔ بھارت کے لوگوں میں تشویش ہے کہ اس مسئلہ کو کس طرح ڈیل کیا جائے گا کیونکہ پاکستانی حکومت اور اسٹبلیشمنٹ الگ الگ زبان بول رہی ہے۔ امتیاز عالم ،جگنو محسن، سلیمہ ہاشمی، آئی اے رحمان اور ہارون شاہ نے کہا کہ پاکستان دہشت گردی کا زیادہ شکار ہے اور پاکستان جنگ کا متحمل نہیں ہو سکتا ہے۔