شہباز کی تقریر کے دوران لیگی ورکر ہائیکورٹ کا گیٹ توڑ کر اندر داخل ہو گئے

لاہور (وقائع نگار خصوصی) لاہور ہائیکورٹ بار میں شہباز شریف کی تقریر کے دوران سینکڑوں لیگی ورکر ہائیکورٹ کا گیٹ توڑ کر پنڈال میں داخل ہو گئے جس پر شہباز شریف نے تقریر ختم کی اور پنجاب اسمبلی کے لئے روانہ ہو گئے۔ گذشتہ روز لاہور ہائیکورٹ بار میں خطاب کے موقع پر پنڈال کے اندر وکلاء اور میڈیا کے لئے ہزاروں کرسیوں کا انتظام کیا گیا تھا لیکن کسی مسلم لیگی ورکر کو ہائیکورٹ کے احاطہ میں آنے کی اجازت نہیں دی گئی تھی‘ ابھی میاں شہباز شریف کو تقریر کرتے ہوئے 20 منٹ ہی ہوئے تھے کہ سینکڑوں لیگی کارکن لاہور ہائیکورٹ کا مال روڈ پر جی پی اوچوک والا گیٹ توڑ کر اندر داخل ہو گئے جنہوں نے مسلم لیگ کے جھنڈے اٹھا رکھے تھے جس پر میاں شہباز شریف نے اپنی تقریر روک دی اور پاکستان‘ انقلاب اور عدالت زندہ باد کا نعرہ لگا کر سٹیج سے ہٹ گئے جبکہ سیکرٹری لاہور ہائیکورٹ بار نے کہا کہ مسلم لیگی ورکر فوری طور پر ہائیکورٹ کے گیٹ سے باہر نکل جائیں۔ یہ سنتے ہی کارکن بھی ہائیکورٹ سے باہر نکلنا شروع ہو گئے۔ شہباز شریف کی لاہور ہائیکورٹ آمد کے موقع پر سخت حفاظتی اقدامات کئے گئے تھے۔ پولیس اہلکاروں کی بڑی تعداد لاہور ہائیکورٹ کے اندر اور ارد گرد کی عمارتوں پر بھی موجود تھی اور وکلاء و میڈیا کے علاوہ کسی کو پنڈال میں آنے نہیں دیا جا رہا تھا۔