انتخابات سے قبل بہت سے اہم رہنماء(ق) لیگ چھوڑ جائینگے


لاہور (خصوصی رپورٹر) سابق حکمران جماعت پاکستان مسلم لیگ (ق) کی موجودہ حکمران اتحاد میں شمولیت سے انکی ڈوبتی ناﺅ سنبھل گئی تھی تاہم بعض اہم رہنماﺅں کے (ق) لیگ چھوڑنے سے امکان پیدا ہوگیا ہے کہ آنیوالے الیکشن سے پہلے بہت سے اہم رہنماء(ق) لیگ چھوڑ جائیں گے، بالخصوص امیر مقام، فیصل صالح حیات، ریاض پیرزادہ اور غوث بخش مہر کی ناراضگیوں نے پارٹی ساکھ کو بہت نقصان پہنچایا۔ (ق) لیگ کے الیکشن 2008ءمیں 55 ممبران قومی اسمبلی اور 83 ممبران پنجاب اسمبلی جبکہ 20 ممبران بلوچستان اسمبلی، 11 ممبران سندھ اسمبلی اور 7 ممبران خیبر پی کے اسمبلی تھے مگر ان میں سے اکثریت پارٹی ڈسپلن کی خلاف ورزی کی مرتکب ہوتی رہی لیکن جوں ہی (ق) لیگ کا پیپلز پارٹی سے معاہدہ ہوا بیشتر ممبران اسمبلی نے (ق) لیگ سے اپنی قسمت دوبارہ وابستہ کرلی۔ امکان یہی ہے کہ آنیوالے الیکشن میں (ق) لیگ اور پیپلز پارٹی کا اتحاد (ق) لیگ کو سیاسی تقویت بخشے گا۔