بینظیر کے قاتل حکومت میں موجود ہیں: غلام مصطفیٰ کھر

لاہور (خبر نگار خصوصی) پنجاب کے سابق گورنر و وزیراعلیٰ ملک غلام مصطفیٰ کھر نے کالاباغ ڈیم کو پاکستان کی بنیاد قرار دیتے ہوئے کہا کہ یہ مسئلہ کشمیر اور ایٹمی صلاحیت سے بھی زیادہ اہمیت رکھتا ہے کیونکہ اس پر ہمارے مستقبل کا انحصار ہے۔ دسمبر تک لوڈشیڈنگ کے خاتمہ کا اعلان کھلا جھوٹ ہے۔ 18 فروری 2008ء کے انتخابات عوام کے غلط فیصلہ کا نتیجہ تھا‘ ان کے پاس کوئی چوائس نہیں تھی‘ الیکشن ٹرائل بنیاد پر ہوئے جو ناکام ہو گئے۔ حکومت باقی رہنے کا کوئی جواز نہیں رہا۔ جنوبی پنجاب کی محرومیاں کم کرنے کیلئے سرائیکی صوبہ کا قیام ضروری ہے۔ صدر زرداری کی آج کی صورتحال جنرل مشرف کے آخری دور سے مطابقت رکھتی ہے۔ سوات آپریشن سے نئی صورتحال لانگ ٹرم حوالے سے تشویشناک ہے۔ اکبر بگٹی محب وطن تھے جو 1973ء کے آئین کے تحت مسائل کا حل چاہتے تھے۔ وہ گزشتہ روز وقت نیوز کے پروگرام ’’اگلا قدم‘‘ میں میزبان سلمان غنی کے سوالات کے جوابات دے رہے تھے۔ پروگرام کے پروڈیوسر میاں شاہد ندیم جبکہ اسسٹنٹ پروڈیوسر وقار قریشی تھے۔ انہوں نے بے نظیر بھٹو کے قتل کو المیہ قرار دیتے ہوئے کہا کہ ان کے قاتل آج کی حکومت میں موجود ہیں تاہم بے نظیر بھٹو کا قصور یہ تھا کہ اسٹیبلشمنٹ ان پر اعتماد نہیں کرتی تھی۔ انہوں نے کہا کہ ہمارا قومی المیہ یہ ہے کہ پاکستان کی اسٹیبلشمنٹ صرف کرپٹ اور بددیانت لوگوں پر اعتماد کرتی ہے۔ انہوں نے کہا کہ موجودہ پیپلز پارٹی بھٹو یا بے نظیر کی پارٹی نہیں زرداری لیگ ہے۔ سندھ میں صحیح پیپلز پارٹی کے لوگ زرداری کے خلاف ہیں۔ انہوں نے کہا کہ عوام نے صدر زرداری کو ووٹ نہیں دیئے‘ انہوں نے بے نظیر بھٹو کی شہادت کو سامنے رکھ کر فیصلہ دیا مگر دوسری طرف ظلم یہ ہوا کہ بے نظیر بھٹو کی جعلی وصیت متزلزل لہجے کے ساتھ پڑھ کر سنائی گئی اور امین فہیم کو وزیراعظم کا امیدوار قرار دیا گیا۔ انہوں نے صدر زرداری کی جانب سے تربیلا سے پنجاب کا پانی کم کرنے کے اقدام پر شدید احتجاج کیا۔ یہ صدر کا آئینی حق نہیں کہ وہ کسی صوبہ کا پانی کم کر سکے۔ ا نہوں نے ایک سوال پر کہا کہ صدر زرداری کے مفادات پاکستان سے نہیں دولت سے مشروط ہیں۔ جب میں وزیر واپڈا تھا تو انہں نے میرے محکمے میں من مانی اور کرپشن کرنے کی کوشش کی لیکن میں نے ناکام بنا دی۔ یہ اپنی عادات نہیں چھوڑ سکتے لہٰذا اب بھی ضرورت اس امر کی ہے کہ بلوچستان کے سلگتے مسائل پر صدر زرداری‘ وزیراعظم گیلانی اور نواز شریف ملکر ڈائیلاگ کریں۔ انہوں نے ایک سوال پر کہا کہ مجھے چند ماہ دے دیئے جائیں تو میں مسائل حل کر سکتا ہوں۔
کھر