امریکہ‘ افغانستان پر قبضہ برقرار نہیں رکھ سکا‘ بھارت بھی کشمیر میں نہیں ٹھہر سکے گا : حافظ سعید

لاہور( رپورٹ۔ خواجہ فرخ سعید) جماعت الدعوة پاکستان کے امیر پروفیسر حافظ محمد سعید نے کہا ہے کہ امریکہ اور اُس کے اتحادی افغانستان پر قبضہ برقرار نہیں رکھ سکے تو بھارت بھی کشمیر میں نہیں ٹھہر سکے گا، بھارت اپنی 8لاکھ فوج کشمیر سے نکال لے وگرنہ امریکہ کے خطہ سے نکلنے کے بعد اسے بہت کچھ چھوڑنا پڑے گا۔ بھارت کو امریکہ کی شہ حاصل ہے اور اُس کے جرنیل افغانستان میں اپنے قونصل خانوں میں بیٹھ کر سندھ، سرحد، بلوچستان اور دیگر علاقوں میں علیحدگی کی تحریکیں منظم کر رہے ہیں۔ پاکستانیوں کے قاتل ریمنڈ کو سخت سزا ملنی چاہئے تھی تاکہ دنیا پر واضح ہوتا کہ پاکستان آزاد ملک ہے،مسلم حکمرانوں اور عوام میں بہت فاصلہ ہے، مسلمان وسائل اور ٹیکنالوجی کے میدان میں کسی سے پیچھے نہیں، مسلمان حکمرانوں کو چاہئے کہ او آئی سی کے مردہ گھوڑے کی جان چھوڑیں اور مشترکہ دفاعی و معاشی نظام تشکیل دیں،مسلم حکمرانوں نے اپنی ذمہ داریاں نہ نبھائیں تو ان کا حشر بھی لیبیا، مصر اور تیونس کے حکمرانوں جیسا ہوگا، مسئلہ کشمیر مذاکرات سے حل ہونے کی کوئی توقع نہیں بھارت نے مذاکرات کو ہمیشہ کشمیر میں تسلط قائم رکھنے کیلئے استعمال کیا۔نوائے وقت اور مجید نظامی دفاع پاکستان اور نظریے کے محافظ کا کردارادا کر رہے ہیں۔ وہ گزشتہ روز حمید نظامی ہال میں روزنامہ نوائے وقت، دی نیشن اور وقت نیوز کے زیر اہتمام پروگرام ایوان وقت میں ”امت مسلمہ کو درپیش چیلنجز اور اُن کا حل“ کے موضوع پر خطاب کر رہے تھے۔اس موقع پر ایڈیٹر انچیف نوائے وقت مجید نظامی بھی موجود تھے۔میزبانی کے فرائض انچارج ایوان وقت خواجہ فرخ سعید نے سرانجام دئیے۔ اس موقع پر حمید نظامی ہال میں تِل دھرنے کی جگہ نہیں تھی۔زندگی کے مختلف شعبوں سے تعلق رکھنے والے نوجوانوں کی بڑی تعداد سٹیج کے سامنے زمین پر بیٹھی ہوئی تھی۔پروفیسر حافظ محمد سعید نے مزید کہا کہ بلا شبہ امت مسلمہ کو کچھ مسائل بھی درپیش ہیں لیکن امت کو اللہ کا شکرادا کرناچاہئے کہ امت مسلمہ بیدار ہوچکی ہے ہمیں مسئلہ کشمیر اور اسلام دشمنوں کو زیادہ مسائل درپیش ہیں امت میدانوں میں خم ٹھونک کر کھڑی ہے اور دشمنان اسلام بھاگ رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ امریکہ اور اسکے اتحادی افغانستان پر قبضہ برقرار نہیں رکھ سکے تو بھارت بھی کشمیر میں نہیں ٹھہر سکتا۔ انہوں نے کہا بھارت اگر پاکستان میں بم دھماکے خودکش حملے کروانے اور تخریب کاری سے باز نہیں آتا تو پھر مسلمان بھی یہ حق رکھتے ہیں کہ بھارت سے انتقام لیں اور کشمیر کو جہادہند کادروازہ بنا کر مسلم اکثریتی علاقوں کو بھارت کے قبضے سے آزاد کروائیں۔ انہوں نے کہا کہ ہمارے حکمران ناکام ہیں یہ نہ اسلام کی نمائندگی کرتے ہیں اور نہ ہی اسلامیان پاکستان کی نمائندگی کرتے ہیں۔انہوں نے کہا کہ پاکستان سمیت مسلم ممالک امریکہ کی سٹرٹیجک پارٹنر شپ سے علیحدہ ہوجائیں۔ انہوں نے کہا کہ یورپی یونین کی طرزپر اسلامی یونین، یورپین پارلیمنٹ کی طرز پر اسلامی پارلیمنٹ بنائی جائیں۔یورو کی طرح اسلامی سکہ رائج کیاجائے۔ ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ قوم کے محسنوں کے کارنامے ہمیشہ چمکتے رہیں گے۔ قوم ڈاکٹر عبدالقدیر اور عافیہ صدیقی کی قربانیوں کو کبھی نہیں بھلا سکے گی۔انہوں نے کہا کہ ہم پر پابندیاں لگوانے میں اقوام متحدہ کا ہاتھ کم اپنوں کا ہاتھ زیادہ تھا لیکن پاکستان آزاد ملک ہے اور ہمیں پابندیوں کی پرواہ نہیں ہے ہم اپنے ملک اور دین کیلئے لڑرہے ہیں حق بات کہنے سے کوئی نہیں روک سکتا۔