حکومت رحمن ملک کو عہدہ سے ہٹائے‘ بابر اعوان کو سائیڈ لائن کر دے: خفیہ ایجنسی کی سفارش

لاہور (جواد آر اعوان / دی نیشن رپورٹ) ایک حساس ایجنسی کی موجودہ سیاسی صورتحال کے بارے میں رپورٹ میں حکومت سے سفارش کی گئی ہے کہ سزاﺅں کی معافی کے بعد کی پیدا شدہ صورتحال کے پیش نظر رحمن ملک کو ان کے عہدہ سے ہٹا دیا جائے ان سفارشات سے واقف ذرائع نے بتایا کہ وفاقی حکومت نے ایک حساس ایجنسی سے کہا تھا کہ وہ موجودہ بحران سے نکلنے کے لئے اپنی تجاویز پیش کرے جو کہ رحمن ملک اور این آر او سے فائدہ اٹھانے والے دیگر افراد کی معافی کے بعد سامنے آیا ہے اس پر اس ایجنسی نے سفارش پیش کی کہ رحمان ملک کو ان کے عہدے سے ہٹا دیا جائے سیاسی درجہ حرارت بڑھنے کے باعث وقتی طور پر وفاقی وزیر قانون بابر اعوان کو بھی سائیڈ لائن پر کرنے کی تجویز دی ہے ان ذرائع نے یہ بھی بتایا کہ رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ اعتزاز احسن کو صدر زرداری کا وکیل بنایا جائے بصورت دیگر ان کے استثنیٰ کے حوالے سے کسی بھی وقت کوئی مسئلہ درپیش ہو سکتا ہے۔ اس کے علاوہ حکومت سے کہا گیا ہے کہ وہ وزیروں سے کہے کہ وہ عدلیہ کے خلاف اشتعال انگیز بیانات نہ دیں۔