برہمن برصغیر کے بڑے دہشت گرد اور پاکستان، بھارت اختلافات کے ذمہ دار ہیں:بھارتی دانشور

لاہور (پ ر) معروف بھارتی دانشور اور دلت وائس کے ایڈیٹر وی ٹی راج شیکر نے کہا ہے کہ برصغیر کے لوگوں کا اصل دشمن برہمن ہے آج پاکستان اور بھارت کے درمیان اختلاف کی خلیج کا ذمہ دار بھی برہمن ہے۔ ہمیں جس قدر مشکلات کا سامنا ہے اس کی وجہ یہی برہمن ہے۔ بھارت میں مسلمانوں کی تعداد پاکستان کی تعداد سے کہیں زیادہ ہے جو بیس فیصد ہے لیکن انتہائی پس ماندہ رکھا گیا ہے اور وہ بدترین حالات سے دوچار ہے۔ جمہوریت کے دعویدار برہمن برصغیر کے سب سے بڑے دہشت گرد ہیں لیکن وہ پاکستانیوں اور کشمیریوں کو دہشت گرد قرار دیتے ہیں۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے گزشتہ روز منصورہ میں ہندوستان کی دلت آبادی کے مسائل اور اسلام کے بارے میں اپنے احساسات پر لیکچر دیتے ہوئے کیا۔ اس موقع پر ڈاکٹر راجو تھامس (کیرالہ) اور یوسف عرفان بھی ان کے ساتھ تھے۔ وی ٹی راج شیکر نے مزید کہا کہ بھارت میں اچھوتوں اور مسلمانوں کو ملایا جائے تو پچاس فیصد بنتے ہیں۔ مسیحی، سکھ اور دوسری اقلیتیں الگ ہیں۔ ان سب کو تین فیصد برہنموں نے یرغمال بنا رکھا ہے۔ انہوں نے کہا کہ میرا اور آپ کا دشمن مشترکہ ہے۔ بھارت اور پاکستان کے مسلمان عرب، عراق، ترکی اور شام سے نہیں آئے۔ آپ اور ہم بھائی ہیں یہی بات مولانا مودودی نے واضح کی تھی اور علامہ اقبالؒ نے بھی اس نکتے کو واضح کیا تھا لیکن تین فیصد برہمن حکمرانوں نے بھائی کو بھائی سے لڑا دیا۔ آخر کتنے طویل عرصے تک ہم ایک دوسرے سے لڑتے رہیں گے۔ انہوں نے کہا کہ مجھے خوشی ہوتی ہے یہاں بھارت کی طرح کچی آبادیاں نہیں ہیں۔ ممبئی اور دیگر شہر گداگروں سے بھرے ہوئے ہیں۔ جب ہم بھارتی شہریوں کو بتایا جاتا ہے پاکستان اب تباہ ہونے والا ہے۔ مجھے خوشی ہے کہ آپ نے اپنی اقلیتوں کے ساتھ اچھا معاملہ کر رکھا ہے۔ اس موقع پر جماعت اسلامی پاکستان کے سیکرٹری جنرل لیاقت بلوچ نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ میں وفد کے خیالات سے اتفاق کرتا ہوں۔ خطے کو درپیش حالات کا احساس بھارتی حکمرانوں اور پالیسی ساز اداروں کو نہیں ہے۔ انہوں نے کہا کہ دنیا میں غالباً پاکستان ایک واحد ملک ہے جہاں پر موجود اقلیتوں کو دوہرے ووٹ کا حق حاصل ہے۔ بھارتی حکمران ہوش کے ناخن لیتے ہوئے دونوں ممالک کی عوام کی بہتری کے لئے کشمیر جیسے بنیادی مسئلے کو حل کریں۔