گرمی سے خاتون سمیت مزید 2 ہلاک‘ لوڈشیڈنگ جاری‘ لاہور میں ٹرانسفارمر خراب ہونے پر مظاہرے

لاہور(نیوز رپورٹر+نامہ نگاران) تعطیل کے باوجود ملک بھر میں لوڈشیڈنگ کا دورانیہ اپنے عروج پر رہا اور لوڈشیڈنگ پر لوگ بلبلا اٹھے جبکہ قیامت خیز گرمی کی شدت برداشت نہ کرتے ہوئے خاتون سمیت 2 افراد جاں بحق ہوگئے ہلاکتیں نارنگ منڈی میں ہوئیں۔ حافظ آباد، ٹوبہ ٹیک سنگھ، پیر محل، سرگودھا، سلانوالی، بصیر پور، پھلروان، وہاڑی، ڈونگہ بونگہ اور دیگر شہروں اور دیہات میں 12سے 18 گھنٹے کی بدترین لوڈ شیڈنگ پر لوگ سراپا احتجاج بن گئے جبکہ لوڈ شیڈنگ سے کاروبار ٹھپ اور لو گوں کو شدید مشکلات کا سامنا کرنا پڑا۔ پانی کی بھی قلت رہی۔اتوار کی تعطیل کے باوجود شہری علاقوں میں 12سے 14جبکہ دیہی علاقوں میں 16سے 18گھنٹے لوڈ شیڈنگ کی گئی۔محکمہ موسمیات کے مطابق ملک بھرمیں گرمی کی لہر26 جون تک جاری رہے گی جبکہ تیس جون سے مون سون کی بارشوں کی پیشگوئی بھی کی گئی ہے۔ محکمہ موسمیات کی رپورٹ کے مطابق آئندہ چوبیس گھنٹے کے دوران ملک کے بیشترعلاقوں میں موسم گرم اور خشک رہے گا۔نارنگ منڈی سے نامہ نگار کے مطابق شدید گرمی کے باعث خاتون سمیت 2 افراد دم توڑ گئے جبکہ آلہ پور سیداں میں دیہاتیوں نے لوڈ شیڈنگ کے خلاف احتجاجی مظاہرہ کیا اور واپڈا کے خلاف نعرے بازی کی گئی ہلاک ہونے والوں میں ریاست علی اور ایک خاتون شامل ہیں۔ سرگودھا سے نامہ نگار کے مطابق سرگودھا اور گرد و نواح میں بجلی کی طویل غیر اعلانیہ لوڈشیڈنگ سے لوگ بلبلا اٹھے۔ ٹوبہ ٹیک سنگھ شہر اور گرد و نواح میں بجلی کی غیر اعلانیہ طویل لوڈشیڈنگ کا سلسلہ جاری ہے، ہر ایک گھنٹہ کے بعد تین، تین گھنٹے لگاتار بجلی بند رہنے کے باعث کاروبار زندگی بری طرح مفلوج ہو کر رہ گیا ہے۔ پیر محل سے نامہ نگار کے مطابق بجلی غیر اعلانیہ لوڈشیڈنگ دورانیہ ایک بار پھر 18 گھنٹوں سے تجاوز کر جانے کی وجہ سے تمام کاروباری زندگی مفلوج ہو کر رہ گئی۔حافظ آباد سے نمائندہ نوائے وقت کے مطابق اٹھارہ اٹھارہ گھنٹے کی لوڈشیڈنگ نے عوام کا جینا دوبھر کر رکھا ہے۔لاہور میں گرمی کی شدت اور حبس کے باعث لیسکو کا گرڈ سٹیشن سسٹم اوور لوڈ ہوگیا جس کے باعث لاہور کے مختلف مقامات پر نصب ٹرانسفارمر جل گئے۔ شہریوں کو مسلسل 10 سے 12 گھنٹے تک بجلی کی بندش کا سامنا کرنا پڑا، اس صورتحال کے باعث دارالحکومت میں مغلپورہ، گڑھی شاہو، شاہدرہ، سمن آباد اور اسلام پورہ میں بجلی کے ٹرانسفارمر جلنے پر صارفین نے شدید احتجاج کیا اور لیسکو کے خلاف نعرے بازی کی۔ لیسکو انتظامیہ کا کہنا ہے کہ جن علاقوں میں ٹرانسفارمر جلے ہیں ان میں اضافی ٹرالی ٹرانسفارمر نصب کردیئے گئے ہیں۔