بھارت چناب سے پمپس کے ذریعے براہِ راست پانی نکالنا بند کرے: پاکستان

اسلام آباد (ثناءنےوز) پاکستان اور بھارت میں مغربی دریاﺅں کے پانی کے زرعی استعمال پر نیا تنازعہ پیدا ہو گیا ہے اور پاکستان نے دریائے چناب سے پمپس کے ذریعے براہ راست پانی نکالنے کا عمل بند کر نے کا مطالبہ کر دیا ہے یہ بات پاکستانی کمشنر برائے سندھ طاس سید جماعت علی شاہ نے ایک نجی ٹی وی سے گفتگو کر تے ہوئے کہی۔ انہوں نے کہا کہ بھارت نے چناب کا مزید پانی زرعی مقاصد کے لئے استعمال کیا تو پاکستان کی طرف بہاﺅ ساڑھے تین لاکھ ایکڑ فٹ مزید کم ہو جائے گا اور خشک سالی کے دنوں میں پانی کی قلت شدت اختیار کر جائے گی۔ انہوں نے کہا کہ بھارت 1984ءسے مقبوضہ کشمیر میں دریائے چناب جہلم اور سندھ کے پانیوں کے زرعی استعمال کی تفصیل فراہم کر نے سے مسلسل انکار کر رہا ہے جس کے باعث اس مسئلے کو کمشن کی سطح پر تنازعہ قرار دینا ضروری ہے۔ جماعت علی شاہ نے کہا کہ دریائے چناب میں اس سال معمول سے بہت کم پانی پر پاکستان کی تشویش سے بھارتی کمشنر کو آگاہ کر دیا ہے اور بھارت نے اب بھی پانی کے زرعی استعمال کی تفصیل فراہم نہ کی تو عالمی بنک کے ثالث سے رابطہ کیا جائے گا‘ انہوں نے کہا کہ بھارت کی طرف سے پاکستانی دریاﺅں کے پانی کا زرعی استعمال بڑھانے پر سالانہ 15 ایکڑ فٹ پانی کی مزید کمی ہو گی۔