لیگی دھڑوں کا اتحاد، نوازشریف اور شجاعت سے مل کر مایوسی ہوئی: ظفراللہ جمالی

بھیرہ / بھلوال / اسلام آباد (نامہ نگاران + مانیٹرنگ نیوز) سابق وزیراعظم میر ظفر اللہ جمالی نے کہا ہے کہ پاکستان کے استحکام اور جمہوریت کے فروغ کے لئے لیگی دھڑوں کا ایک پلیٹ فارم پر متحد ہونا ضروری ہے اس مقصد کے لئے مےں اور دوسرے مخلص لیگی رہنما کوشاں تھے لیکن نوازشریف اور چودھری شجاعت سے ملاقات کے بعد مجھے سخت مایوسی ہوئی اب مےں ان کے لئے دعا ہی کر سکتا ہوں۔ یہ بات سابق وزیراعظم میر ظفر اللہ خان جمالی نے انٹرچینج بھیرہ پر صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے کہی۔ انہوں نے کہا کہ ملک آج کل گھمبیر مسائل سے دوچار ہے۔ مسائل کی دلدل سے نکلنے کے لئے محب وطن قوتوں کو آگے آنا ہوگا۔ قبل ازیں بھلوال کے علاقے فتح آباد نون مےں ملک احمد خان نون کی وفات پر اہلخانہ سے تعزیت کے بعد صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے میر ظفر اللہ جمالی نے کہا شاہ زین بگٹی کی گرفتاری سرکار کے کام ہےں، سرکار جسے چاہے پکڑے اور جس کو چاہے چھوڑ دے، بلوچستان مےں حالات بگاڑنے کی بجائے سدھارنے کی ضرورت ہے۔ انہوں نے کہا یہ وقت مڈٹرم الیکشن کا نہیں ہے، اس موقع پر ملک ضیاءالحق نون، فتح خان نون، ارشد دوشی اور راجہ جمیل بھی موجود تھے۔