چیچہ وطنی: ساتھی ڈاکو فرار کرانے کیلئے بخشی خانہ پر دھاوا، کانسٹیبل جاں بحق ، 4حملہ آور بھی ہلاک

چیچہ وطنی (نامہ نگار) بدنام زمانہ ڈاکوکو فرارکروانے کیلئے اس کے ساتھیوں نے تحصیل کچہری کے بخشی خانہ پرحملہ کر دیا جس سے کانسٹیبل جاں بحق جبکہ 3حملہ آور ہلاک ہوئے اور فرارکے بعد ایک گھنٹہ سے زائد پولیس مقابلہ میں نذرلبانہ بھی مارا گیا جبکہ کانسٹیبل ،ایک نائب کورٹ اور ایک قیدی شدید زخمی ہوگیا۔ تفصیلات کے مطابق گزشتہ روز 4بجے کے قریب حوالاتیوں کو پیشی کے بعد ڈسٹرکٹ جیل ساہیوال لے جانے کے لئے وین میں سوارکرایا جا رہا تھا کہ اچانک تحصیل کچہری کی دیواریں پھلانگ کر بدنام زمانہ قاتل اور ڈاکو نذرلبانہ کے ساتھیوں نے اسے فرارکروانے کیلئے بخشی خانہ پر حملہ کردیا اس دوران 2قیدیوں خالد اور بابر نے پولیس اہلکاروں کی آنکھوں میں مرچیں ڈال دیں فرارہوتے ہوئے ڈاکوﺅں کی فائرنگ سے کانسٹیبل محمد حسین لوہڑی جاں بحق ہوگیاجبکہ پولیس کی جوابی فائرنگ سے 3 حملہ آور ہلاک ہوگئے دیگر حملہ آور اور نذرلبانہ سیشن کورٹ کے نزدیک واقع مشرقی گیٹ توڑ کر احمد نگر میں داخل ہوگئے جہاں نذرلبانہ نے ایک گھر میں داخل ہو کراہل خانہ کو یرغمال بنالیا تعاقب کرنے والے پولیس اہلکاروں نے ڈی ایس پی اور پولیس افسر کی قیادت میں علاقہ کا محاصرہ کرلیا اور ایک گھنٹے کے مقابلہ کے بعد نذرلبانہ بھی ہلاک ہوگیا۔ ذرائع کے مطابق فائرنگ کے تبادلے کے دوران بعض قیدی بھی حوالات سے فرار ہو گئے۔ جن کی گرفتاری کیلئے پولیس نے سرچ آپریشن شروع کردیا ہے۔ مرنیوالوں میں اشتہاری ملزم علی شیر ڈکیت بھی شامل ہے جو نذرلبانہ کا ساتھی تھا۔