موسم سرما میں پاکستان کے لاکھوں متاثرین غذائی بحران کا شکار ہو جائیں گے

دوحہ/ قطر (بی بی سی ڈاٹ کام) ریڈ کراس اور ریڈ کریسنٹ کی بین الاقوامی فیڈریشن نے وارننگ دی ہے کہ مزید امداد مہیا نہ کی گئی تو موسم سرما میں پاکستان کے لاکھوں سیلاب متاثرین غذائی بحران کا شکار ہو جائیں گے۔ فیڈریشن کے مطابق پہلے ہی 14فیصد متاثرین غذائی قلت کا شکار ہو چکے ہیں اور فصلیں تباہ ہونے کے باعث متاثرین سیلاب کا ابھی غذائی امداد پر مزید انحصار بڑھے گا۔ قطر کے دارالحکومت دوحہ میں اجلاس کے بعد انٹرنیشنل فیڈریشن آف ریڈ کراس اینڈ ریڈ کریسنٹ سوسائٹیز نے ایک بیان میں کہا کہ عالمی برادری متاثرین سیلاب کیلئے امدادی کارروائیوں میں تیزی لائے۔ ہنگامی صورتحال ابھی ختم نہیں ہوئی۔ ہمیں متاثرین کو آئندہ برس تک امدادی اشیا پہنچانے کیلئے تیار رہنا چاہئے۔ اس وقت شمالی علاقوں میں لوگوں کے پاس گھر نہیں، پنجاب میں زرعی زمینیں زیر آب آنے سے غریب کاشکار مشکلات کا شکار ہیں جبکہ سندھ میں 14لاکھ متاثرین ابھی تک کیمپوں میں رہنے پر مجبور ہیں۔ بی بی سی کے مطابق کئی علاقوں سے سیلابی پانی اتر چکا ہے تاہم ابھی تک زرعی اراضی قابل کاشت نہیں ہو سکی۔