صدر کا سیاسی اجتماع سے خطاب عدالتی فیصلے کا مذاق اڑانے کے مترادف ہے: مشاہد اللہ


لاہور (خصوصی رپورٹر) مسلم لیگ (ن) کے مرکزی سیکرٹری اطلاعات سینیٹر مشاہد اللہ خان نے کہا ہے کہ صدرآصف زرداری کا ملکوال میں سیاسی اجتماع سے خطاب آئین کی صریحاً خلاف ورزی اور سپریم کورٹ کے حالیہ فیصلے کا مذاق اڑانے کے مترادف ہے۔ انہوں نے کہا کہ صدر آصف زرداری اپنا نہیں تو ملک کے سب سے بڑے آئینی عہدے کے تقدس کا ہی خیال کر لیں۔ مشاہد اللہ خان نے کہا کہ صدر سیاسی عمل کے ذریعے ضرور منتخب ہوتا ہے لیکن منتخب ہونے کے بعد اس کی حیثیت غیر جانبدار ہو جاتی ہے۔ انہوں نے کہا کہ آئین کا رکھوالا کسی مخصوص جماعت کا جیالا نہیں ہو سکتا، مخصوص جماعت کے جلسوں اور اجلاسوں میں شرکت کرنے سے آئینی سربراہ کی حیثیت متنازعہ ہو جاتی ہے جو کہ وفاق کی مضبوطی کے مسلمہ اصولوں کے خلاف ہے۔ این این آئی کے مطابق مسلم لیگ (ن) کے مرکزی رہنما سینیٹر طارق عظیم نے کہا ہے کہ صدر زرداری سیاسی جلسوں میں تقریریں کر کے صدر کے منصب کی توہین نہ کریں، پیپلز پارٹی عدلیہ کے ساتھ محاذ آرائی سے باز آئے اور اپنی توجہ ملک میں بڑھتی ہوئی دہشت گردی کو روکنے اور کراچی کے حالات ٹھیک کرنے پر مرکوز کرے۔