فوج اور عدلیہ کیخلاف بیان بازی کرنے والوں کی ڈوربیرون ملک سے ہلائی جارہی ہے

فیصل آباد (نمائندہ خصوصی) دفاع پاکستان کونسل کے تحت سیاسی و مذہبی جماعتوں کے قائدین، جید علماء کرام اور مشائخ عظام نے دفاع امت کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا ہے کہ دفاع پاکستان کونسل نے پہلے بھی نیٹو سپلائی بند کی اب ایک بار پھر امریکی سپلائی بندکرنے کی تحریک چلائیں گے۔ دشمن قوتیں پاکستان میں فوج اور عوام کو لڑانے کی کوششیں کر رہی ہیں۔ پاک فوج اور عدلیہ کیخلاف بیان بازی اور گالیاں دینا انہی مذموم سازشوں کا حصہ ہے۔ ایسے لیڈروں کی ڈوریں بیرون ممالک سے ہلائی جارہی ہیں۔ نواز شریف اور دیگر حکومتی ذمہ داران الزامات کی سیاست کر رہے ہیں۔ شیخ مجیب الرحمن کو محب وطن کہنے والے مودی اور ٹرمپ سے ملکر ملک توڑنے کی سازشیں کر رہے ہیں۔ ایسے مفاد پرست سیاستدان ملک کی جان چھوڑ دیں اور اسے ترقی کرنے دیں۔ قبلہ اول اور کشمیر کی آزادی کیلئے بھرپور جدوجہد جاری رکھیں گے۔2018ء کشمیر کے نام کرتے ہیں۔ امریکہ اور اس کے اتحادی داعش کے درندوں کو پاک افغان بارڈر پر لاکرمنظم کر رہے ہیں۔ پاکستان میں پراکسی وار تیز کرنے اور شہر شہر خودکش دھماکوں کی منصوبہ بندیاں کی جارہی ہیں۔ ملک کے کونے کونے میں جاکر دشمن کی سازشیں بے نقاب اور وسیع تر اتحاد قائم کریں گے۔ پاکستان کا دورہ کرنے والی سلامتی کونسل کی ٹیم مقبوضہ کشمیر جائے جہاں بھارت نے ظلم و بربریت کی انتہا کر رکھی ہے۔ حافظ محمد سعید پوری قوم کے ہیرو ہیں۔ دھوبی گھاٹ گرائونڈ میں ہونیوالی کانفرنس سے دفاع پاکستان کونسل کے چیئرمین مولانا سمیع الحق، پروفیسر حافظ محمد سعید، شیخ رشید احمد، حافظ عبدالرحمن مکی، پیر سید ہارون علی گیلانی، جمشید احمد دستی، خواجہ معین الدین محبوب کوریجہ، مولانا سعید احمد اسد، مولانا امیر حمزہ، سیف اللہ خالد، یعقوب شیخ، مولانا محمد زبیر الباری، مولانا محمد یوسف شاہ، مولانا زاہد محمود قاسمی، فیاض احمد، چوہدری علی اختر، مولانا محمد یوسف انور، مولانا محمد حنیف بھٹی، سردار ظفر حسین خان، مفتی محمد قاسم، مولانا محمد عبدالرزاق، ڈاکٹر جاوید اقبال، سید عبدالوحید شاہ، مولانا ضیا مدنی، پیر جاوید اختر قادری ودیگر نے خطاب کیا۔ خطبہ جمعہ حافظ محمد سعید نے دیا۔ شرکاء کی بہت بڑی تعداد نے گرائونڈ سے ملحقہ سڑکوں پر نماز جمعہ اد ا کی۔ مولانا سمیع الحق نے کہاکہ عالم کفر مسلمانوں کیخلاف ایک ہو چکا ہے۔ کشمیر، فلسطین، برما اراکان میں مسلمانوں پر ظلم کیا جارہا ہے۔ مسلمانوں کی شناخت ختم کرنے کی کوششیں کی جارہی ہیں۔ پاکستان کے دفاع کیلئے سب مذہبی و سیاسی جماعتوں کو ایک پلیٹ فارم پر جمع کریں گے۔ افغانستان کی جنگ ہماری اپنی ہے۔ امریکہ کی جنگ غیروں کی ہے۔ ہم دہلی اور واشنگٹن پر حملہ نہیں کرنا چاہتے۔ حافظ محمد سعید نے کہاکہ ٹرمپ کہتا ہے ہم مزید بے وقوف نہیں بن سکتے تو پھر وہ افغانستان سے اپنی فوج نکالیں اور بھارت سے بھی کہیں کہ وہ کشمیر سے فوج نکال لے۔ امریکہ فلسطین سے متعلق بھی اپنا اعلان واپس لے۔ اس وقت فوج اور عدلیہ کو وہ گالیاں دے رہا ہے جو تین مرتبہ وزیر اعظم بن چکا ہے اور آئندہ بھی بننے کے خواب دیکھ رہا ہے۔ پاکستان کو عدم استحکام سے دوچار کرنے اور اس کی ایٹمی صلاحیت کیخلاف سازشیں کرنے والے ہی یہ سب کچھ کرا رہے ہیں۔ شیخ رشید احمد نے کہا کہ نوازشریف نے کہا کہ شیخ مجیب کے بچوں کے ساتھ ظلم ہوا۔ فیصل آبا د والو، 2018پاکستان پر بھاری سال ہے،۔ جب حسینہ واجد کا الیکشن ہو رہا تھا تو نواز شریف خالدہ ضیا کے ساتھ تھا۔ اس ملک کو توڑنے میں مودی ٹرمپ شامل ہیں۔ اس ملک کو جوڑنے کے لئے مولانا سمیع الحق اور حافظ محمد سعید میدان میں ہیں، ختم نبوت کے پروانوں کو الیکشن میں اکٹھا ہونا پڑے گا۔ جتنا بڑا مجاہد حافظ محمد سعید ہے اتنا بڑا ڈاکو نواز شریف ہے۔ نواز شریف کو شیخ مجیب کا نام یاد ہے کلبھوشن کا یاد نہیں وہ بھارتی جاسوس ہے اس کا نام کبھی نہیں لے گا۔ پروفیسر حافظ عبدالرحمن مکی نے کہاکہ نواز شریف نے خود کو پیچھے رکھ کے وزیر قانون کے ذریعہ عقیدہ ختم نبوت پر حملہ کرایا اور قادیانیوں کی راہ ہموار کرنے کی کوشش کی۔ اگرتلہ کے مجرم اور پاکستان کے قاتل شیخ مجیب الرحمن کو حب الوطنی کے سرٹیفکیٹ دیے جارہے ہیں۔ پیر سید ہارون علی گیلانی نے کہاکہ سلامتی کونسل کا وفد چوبیس جنوری کو اپنے مذموم مقاصد کیلئے آرہا ہے یہ کشمیر کیوں نہیں جاتے یہ وہاں کیوں نہیں جاتے اور وہاں کا دورہ کیوں نہیں کرتے۔ جمشید دستی نے کہا کہ مودی پاکستان کا دشمن ہے اور اس کا یار قوم کا دشمن ہے۔ کشمیر میں ہونیوالے مظالم، قتل و غارت کا ذمہ دار مودی ہے۔ گدی نشین کوٹ مٹھن، صدر علماء و مشائخ پاکستان خواجہ معین الدین کوریجہ نے کہا کہ اسلام رواداری کا حکم دیتا ہے۔ عارضی زندگی میں حق ماریں گے تو اوپر والا حساب لے گا اور یوں لگتا ہے کہ حکمرانوں کا اوپر سے حساب شروع ہو چکا ہے۔ ممتاز عالم دین مولانا سعید احمد اسد نے کہا کہ دو محاذوں پر اس وقت لڑائی ہے ایک محاذ پاک فوج نے سنبھالا ہے، جغرافیائی سرحدوں کی حفاظت کے لئے ہم پاک فوج کے شانہ بشانہ کھڑے ہیں۔ تحریک حرمت رسول ﷺ کے چیئرمین مولانا امیر حمزہ نے کہاکہ نواز شریف کہتا ہے کہ مجھے شیخ مجیب بننے پر مجبور نہ کیا جائے۔ مودی ڈھاکہ میں جاکرپاکستان دولخت کرنے کا اعتراف کرتے ہوئے کہتا ہے کہ میں مکتی باہنی کا رضاکار تھا۔ ملی مسلم لیگ کے صدر سیف اللہ خالد نے کہا کہ بیت المقدس، کشمیر، افغانستان کے حوالہ سے سازشیں ہوں یا ختم نبوت کا مسئلہ، ان سب کا تعلق کفر کی سازشوں سے ہے۔ امریکہ کو پاکستان کا وجود برداشت نہیں۔ پاکستان علماء کونسل کے چیئرمین مولانا زاہد محمود قاسمی، جمعیت علماء اسلام نظریاتی کے ڈپٹی سیکرٹری جنرل مولانا محمد زبیر الباری، جمعیت علماء اسلام (س) کے رہنما مولانا محمد یوسف شاہ، تحریک انصاف کے ضلعی صدرچوہدری علی اختر، مولانا محمد یوسف انور، اہلحدیث اتحاد کونسل کے رہنما مولانا محمد حنیف بھٹی، جماعت اسلامی پنجاب کے نائب امیر سردار ظفر حسین خان، مولانا محمد عبدالرزاق، ڈاکٹر جاوید اقبال،فیاض احمد،سید عبدالوحید شاہ،مولانا ضیا مدنی، پیر جاوید اختر قادری نے کہا کہ جب تک ہم اسلام آباد کے حکمران نہیں بدلیں گے مسائل حل نہیں ہوں گے۔