فرح ڈوگر کیس میں کسی کی حق تلفی نہیں ہوئی جس کا حق تھا اسے اضافی نمبر دیئے گئے: وزیر مملکت تعلیم

اسلام آباد (آن لائن)وفاقی وزیر مملکت برائے تعلیم غلام فرید کاٹھیا نے کہا ہے کہ فرح حمید ڈوگر کیس میں کسی کی حق تلفی نہیں ہوئی ، سٹینڈنگ کمیٹی برائے تعلیم کا اجلاس بلایا جا سکتا ہے لیکن فرح کیس پر بحث نہیں کی جا سکتی۔ قومی تعلیمی پالیسی تیار ہے،جلد پیش کر دی جائیگی۔ ہائیر ایجوکیشن کمیشن کو وزارت کے ما تحت کرنے کے لئے جائزہ لے رہے ہیں ان خیالات کا اظہار وزیر مملکت برائے تعلیم نے ایوارڈ تقریب کے بعد صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے کیا ۔ انہوں نے کہا کہ فرح ڈوگر کا کیس عدالت میں ہے اس لئے اس پر بحث نہیں کی جا سکتی ، قائمہ کمیٹی برائے تعلیم کا اجلاس طلب کیا جا سکتا ہے لیکن اس اجلاس میں فرح ڈوگر کیس کو ڈسکس نہیں کیا جا سکتا انہوں نے کہا کہ فرح ڈوگر کیس میں کسی کی حق تلفی نہیں ہوئی ۔ معمول کے مطابق طلبہ نے دوبارہ چیکنگ کیلئے درخواست دی۔ ان کو ان کے حقوق کے مطابق نمبرز دیئے گئے جس کا حق تھا اسکو اضافی نمبر دیئے گئے۔ایک سوال کے جواب میں وزیر مملکت برائے تعلیم نے کہا کہ قومی تعلیمی پالیسی تیار ہے جلد پیش کی جائے گی۔