شہزادہ ہیری کے نسلی ریمارکس کی ہماری فوج میں کوئی گنجائش نہیں: برطانوی وزیر دفاع

شہزادہ  ہیری  کے  نسلی  ریمارکس  کی  ہماری  فوج  میں  کوئی  گنجائش  نہیں:  برطانوی  وزیر  دفاع

لندن (نمائندہ خصوصی + اے ایف پی) برطانوی وزیر دفاع نے شہزادہ ہیری کے ایک پاکستانی فوجی افسر سے متعلق نسلی ریمارکس کے حوالے سے کہا ہے کہ شہزادہ ہیری نے جو الفاظ استعمال کئے ہیں ان کی برطانوی فوج میں کوئی گنجائش نہیں تاہم وزیراعظم گورڈن براؤن نے کہا ہے کہ برطانوی عوام کو شہزادہ ہیری کو شک کا فائدہ دے کر معاف کر دینا چاہئے۔ ایک ٹی وی انٹرویو میں برطانوی وزیراعظم نے کہا کہ شہزادہ ہیری کے ریمارکس ایک غلطی تھی‘ میرے خیال میں شہزادے کو علم تھا کہ ہمارا معاشرہ اس طرح کے الفاظ کی اجازت نہیں دیتا۔ ادھر برطانوی اخبار ’’دی سن‘‘ کے مطابق شہزادہ ہیری جنہوں نے اپنے ساتھ زیر تربیت کیڈٹ احمد رضا خان کو ’’لٹل پاکی فرینڈ‘‘ کہا تھا کے حوالے سے برطانیہ کی مختلف سیاسی جماعتوں اور رہنماؤں نے ناپسندیدگی کا اظہار کیا ہے‘ اخبار کے مطابق شہزادہ ہیری کو کیولری رجمنٹ کے کرنل فلرٹن کی جانب سے جلد طلب کر کے برطانوی فوج کی طرف سے ان کے ریمارکس پر اظہار ناراضگی کا خط حوالے کیا جائے گا۔ اخبار کے مطابق یہ خط شہزادے کے فوجی کیریئر پر اثرانداز ہو سکتا ہے جبکہ برطانوی وزارت داخلہ کا کہنا ہے کہ شہزادہ ہیری کے خلاف کوئی باقاعدہ شکایت موصول نہیں ہوئی اس لئے فوج میں ان کے خلاف ضابطے کی تحقیقات نہیں ہو گی تاہم ہیری کو فوجی نظم و ضبط کی خلاف ورزی پر کارروائی کا سامنا کرنا پڑ سکتا ہے جبکہ برطانوی فوج کے ترجمان کے مطابق برطانوی فوج میں اس طرح کے نامناسب طرز عمل کو کسی صورت برداشت نہیں کیا جائے گا اور شہزادہ ہیری کے حوالے سے تمام الزامات کو مروجہ فوجی ضابطے کے تحت دیکھا جائے گا جبکہ کیڈٹ احمد رضا خان کے والد محمد یعقوب خان نے کہا ہے کہ وہ شہزادہ ہیری کی معذرت اس وقت تک قبول نہیں کریں گے جب تک ہیری پاکستانی عوام سے معافی نہیں مانگتے‘ انہوں نے کہا کہ پاکی کا لفظ نسلی امتیاز کی علامت ہے‘ شہزادہ ہیری نے اس کا استعمال کر کے ان کے بیٹے ہی نہیں پاکستانی حکومت اور عوام کی بھی توہین کی۔