سینٹ کی قائمہ کمیٹی نے بھارتی ٹی وی چینلز پر پابندی کی سفارش کر دی

سینٹ کی قائمہ کمیٹی نے بھارتی ٹی وی چینلز پر پابندی کی سفارش کر دی

اسلام آباد (ریڈیو مانیٹرنگ+ نیوز ایجنسیاں) سینٹ کی قائمہ کمیٹی برائے اطلاعات و نشریات نے حکومت سے سفارش کی ہے کہ جب تک بھارت کے ساتھ تعلقات اور حالات بہتر نہیں ہوتے بھارتی ٹی وی چینلز پر پابندی عائد کردی جائے‘ کمیٹی نے حکومت کو ہدایت کی کہ وہ تمام میڈیا کے سرکاری اداروں کے گریڈ ایک سے 15 تک عارضی ملازمین کو مستقل کرنے کے اعلان کے مطابق پی ٹی وی‘ ریڈیو پاکستان اور اے پی پی کے عارضی ملازمین کو مستقل کرے۔ کمیٹی نے پی ٹی وی میں ڈائریکٹر کرنٹ افیئر اور ڈائریکٹر نیوز کے رویہ ڈائریکٹر نیوز اینڈ کرنٹ افیئرز کی آسامی کو بھی تنقید کا نشانہ بنایا اور اسے غیرضروری قرار دیا۔ کمیٹی کا اجلاس پیر کو کمیٹی کے چیئرمین سینیٹر لطیف بنگلزئی کی صدارت میں ہوا جس میں کمیٹی کے تمام اراکین سمیت وفاقی سیکرٹری اطلاعات اشفاق گوندل‘ ایم ڈی پی ٹی وی ارشد خان نے شرکت کی۔ اجلاس میں حکومتی میڈیا کی کارکردگی کا جائزہ لیا گیا ہے۔ اجلاس کی کارروائی کے دوران مسلم لیگ (ق) کے سینیٹروں طارق عظیم اور محمد علی درانی نے ملک میں بھارتی چینلز دکھائے جانے کا معاملہ اٹھایا۔ انہوں نے حکومت پر کڑی تنقید کرتے ہوئے کہا کہ موجودہ صورت حال میں بھارت اپنے ملک میں کسی پاکستانی شہری کو ہوٹلز میں قیام کی اجازت نہیں دے رہا ہے جبکہ ہمارے ملک میں 45 سے زائد بھارتی چینلز کو بے لگام چھوڑ دیا گیا ہے۔ کمیٹی نے فوری طور پر بھارتی چینلز کی بندش کی ہدایت کی اور کہا ہے کہ اگر بھارت پاکستانی چینلز کی نشریات کی اجازت دیتا ہے تو اس صورت میں بھارتی چینلز کی اجازت ہونی چاہیے۔ بھارتی چینلز کے حوالے سے مشروط پالیسی اختیار کی جائے۔ کمیٹی نے ملازمین کی بحالی کیلئے غیرجانبدار پالیسی اور واضح طریقہ کار اختیا کرنے کی ہدایت کی۔ کمیٹی نے اپنی آبزرویشن میں کہا ہے کہ اداروں میں 20-20 سالوں سے کنٹریکٹ اور ڈیلی ویجز ملازمین کام کررہے ہیں ہمیشہ ان ملازمین اور اداروں کے درمیان پھڈا رہتا ہے حکومت اس حوالے سے بھی صاف شفاف پالیسی وضع کرے۔ اجلاس میں سرکاری ٹی وی چینل کی کارکردگی پر عدم اعتماد کا اظہار کیا گیا اور کہا گیا کہ پی ٹی وی کو خسارے سے نکالنے کیلئے اقدامات کئے جائیں۔ کمیٹی نے وفاقی وزیر برائے اطلاعات و نشریات شیری رحمان کی اجلاس میں عدم شرکت کا نوٹس لیتے ہوئے ہدایت کی کہ وہ آئندہ اجلاس میں اپنی شرکت کو یقینی بنائیں۔ سینیٹر حاجی عدیل احمد نے کہا کہ بھارت کے نیوز چینلز پر کوئی پابندی کی بجائے تفریحی چینلز پر پابندی لگائی جائے۔ سیکرٹری اطلاعات اشفاق گوندل نے کمیٹی کو یقین دلایا کہ وہ اس سلسلے میں پیمرا حکام اور کیبل آپریٹرز سے بات کریں گے۔