ٹیکس چوری، بھارتی اداکار امیتابھ بچن کو بھارتی سپریم کورٹ نے نوٹس جاری کردیا


نئی دہلی (بی بی سی) بھارت کی سپریم کورٹ نے ٹیکس چوری کے معاملے میں بالی وڈ کے معروف اداکار امیتابھ بچن کو نوٹس جاری کیا ہے۔ عدالت نے یہ نوٹس محکمہ انکم ٹیکس کی ایک درخواست پر جاری کیا ہے۔ محکمہ انکم ٹیکس کا کہنا ہے کہ امیتابھ بچن کو اپنے ٹی وی شو ’کون بنے گا کروڑ پتی‘ کے لیے ایک کروڑ چھیاسٹھ لاکھ روپے کا کافی پہلے کا باقی انکم ٹیکس ادا کرنا ہے۔ اس سے قبل جولائی دوہزار بارہ میں امیتابھ کو ممبئی ہائی کورٹ سے اس وقت راحت ملی تھی جب عدالت نے اس معاملے کو سامنے لانے والے انکم ٹیکس کمشنر کی اپیل کو مسترد کر دیا تھا۔ ہائی کورٹ نے اپنے فیصلے میں انکم ٹیکس ٹریبونل کے فیصلے کو برقرار رکھتے ہوئے کہا تھا کہ ٹیکس کا تعین کرنے والے افسر کی طرف سے انکم ٹیکس ایکٹ کی دفعہ 147 کے تحت شروع کی گئی کارروائی غیر مناسب تھی۔ ہائی کورٹ کے فیصلے کے خلاف محکمہ انکم ٹیکس نے سپریم کورٹ کا دروازہ کھٹکھٹایا تھا۔ تیرہ اکتوبر سنہ دو ہزار دو کو امیتابھ بچن نے اپنی آمدنی چودہ کروڑ ننانوے لاکھ بتاتے ہوئے ریٹرن فائل کیا تھا۔ لیکن 31 مارچ دوہزار تین کو امیتابھ نے ترمیم شدہ ریٹرن داخل کرتے ہوئے اپنی آمدنی آٹھ کروڑ گیارہ لاکھ بتائی تھی۔ ٹیکس کے تعین کا عمل مکمل ہونے سے قبل ہی امیتابھ نے تیرہ مارچ سنہ دوہزار چار میں ترمیم شدہ ریٹرن واپس لے لیا۔