ملک تبدیلی کے دہانے پرکھڑا ہے، قاضی حسین کا مشن جاری رکھیں گے: منور حسن


لاہور (خصوصی نامہ نگار) امیر جماعت اسلامی سید منور حسن نے اس عزم کا اظہار کیا ہے کہ اتحاد عالم اسلامی اور پاکستان کو شاندار اسلامی انقلاب سے ہمکنار کرنے کے لیے قاضی حسین احمد کے مشن کو جاری رکھا جائیگا اور پایہ ¿ تکمیل تک پہنچایا جائے گا، قاضی حسین احمد کی زندگی کا ایک ایک لمحہ پاکستان کو اس کی حقیقی منزل تک پہنچانے اور نفاذ اسلام کی جدوجہد میں گزرا ۔ پیرانہ سالی اور صحت کی خرابی کے باوجود وہ اس مشن پر گامزن رہے، پاکستان تبدیلی کے دہانے پر کھڑا ہے لیکن اب یہاں ایک کرپٹ کو ہٹا کر دوسرے کو مسلط کرنے کی کوئی کوشش کامیاب نہیں ہو گی ، اللہ تعالیٰ قاضی حسین احمد اور پروفیسر غفور احمد کی مغفرت فرمائے۔ ان خیالات کااظہار انہوں نے جامع مسجد منصورہ میں سابق امیر جماعت اسلامی قاضی حسین احمد اور نائب امیر جماعت اسلامی پروفیسر غفور احمد مرحوم کے لیے منعقدہ دعائے مغفرت اور تعزیتی اجتماع کے موقع پر خطاب کرتے ہوئے کیا۔ سابق صدر جسٹس محمد رفیق تارڑ ، چوہدری شجاعت حسین ، وسیم سجاد، سرتاج عزیز، خورشید محمود قصوری، منظور احمد وٹو، پروفیسر حافظ محمد سعید، ایرانی قونصلر جنرل محمد حسین بنی اسدی، چودھری محمد اسلم سلیمی، لیاقت بلوچ، چودھری رحمت الٰہی، ڈاکٹر فرید پراچہ ، حافظ ساجد انور ، میاں مقصود احمد ، مولانا عبدالمالک، بشیر احمد عارف، حافظ محمد ادریس ،اسداللہ بھٹو، عبدالغفار عزیز، نذیر جنجوعہ، اظہر اقبال حسن ،علامہ ع غ کراروی، آغا مرتضیٰ پویا، علامہ محمد ا حمد لدھیانو ی ، عتیق الرحمن معاویہ، شفیق اشرفی، حافظ عبدالغفار روپڑی ،نوابزادہ طلال بگٹی، ہمایوں اخترخان، ایس ایم ظفر، قیوم نظامی، عطاءالحق قاسمی، عطاءالرحمن ، خوشنود علی خان، ملک احمد علی اولکھ ، اشرف سوہنا، علامہ زبیر احمد ظہیر ، ریاض احمد درانی ، امیر حمزہ ، حسین جہانیاں گردیزی ، ملک پرویز، سید معصوم شاہ نقوی ، نذر الرحمن رانا ، سیٹھ عابد حسین، افتخار علی ملک ، چودھری عبدالغفور، ملک کرامت علی کھوکھر، ملک ظہیر عباس، پیر سید نقیب الحسن شاہ ، عثمان نوری، فاروق حیدر مودودی سمیت طلبہ ، خواتین اور بچوں کی بڑی تعداد نے شرکت کی۔ اس موقع پر حافظ محمد سعید نے کہا کہ قاضی حسین احمد ناصرف پاکستان بلکہ بیرون ملک مسلم امہ میں بھی یکساں طور پر مقبول رہے۔ طلال اکبر بگٹی نے کہا کہ قاضی حسین احمد ایک عالمگیر شخصیت تھے۔ چودھری شجاعت حسین نے کہا کہ قاضی کی سیاسی و دینی خدمات کو کبھی فراموش نہیں کیا جاسکتا۔ رفیق تارڑ نے کہا کہ قاضی حسین احمد نبی کے سچے عاشق اور پاکستان میں قرآن و سنت کے نظام کے نفاذ کے خواہاں تھے۔ سرتاج عزیز نے کہا کہ قاضی حسین احمد نے اپنی زندگی قرآن و سنت کی بالادستی کیلئے وقف کر رکھی تھی۔ جمعیت علمائے اتحاد کے سربراہ مولانا عبدالمالک نے قاضی حسین احمد کی روح کو ایصال ثواب اور مغفرت کے لیے دعا کروائی۔