طلال بگٹی کی حافظ سعید سے ملاقات‘ جماعتہ الدعوہ جمہوری وطن پارٹی کا بلوچستان پر جلد آل پارٹیز کانفرنس بلانے کا اعلان


لاہور (خصوصی نامہ نگار) جماعةالدعوة پاکستان اور جمہوری وطن پارٹی نے بلوچستان میں ٹارگٹ کلنگ اور دہشت گردی کے حوالہ سے متفقہ طور پرقومی سطح کی آل پارٹیز کانفرنس کے انعقاد کا اعلان کیا ہے اور کہا ہے کہ محب وطن جماعتیں گرینڈ جرگہ تشکیل دیں۔ بلوچستان پاکستان کی ڈھال ہے اور پاکستان پورے عالم اسلام کی ڈھال ہے۔ یہ مسئلہ انتہائی اہمیت رکھتا ہے اس کے حل میں تاخیر کی کوئی گنجائش نہیں۔ بلوچستان میں بھارتی مداخلت کے صرف شواہد پیش کرنے کی باتیں کافی نہیں ٹارگٹ کلنگ اور دہشت گردی میں ملوث عناصر کو فی الفور گرفتار کیا جائے۔ بلوچستان میں فوجی آپریشن بند کیا جائے۔ جماعة الدعوة کی میزبانی میں ہونے والی اے پی سی میں مسلم لیگ (ن)‘ تحریک انصاف اور پیپلز پارٹی سمیت ملک بھر کی مذہبی و سیاسی جماعتوں کو شرکت کی دعوت دی جائے گی۔ ان خیالات کا اظہار امیر جماعة الدعوة پاکستان پروفیسر حافظ محمد سعید اور جمہوری وطن پارٹی کے سربراہ طلال اکبر بگٹی نے مرکز القادسیہ چوبرجی میں مشترکہ پریس بریفنگ سے خطاب کے دوران کیا۔ قبل ازیں طلال اکبر بگٹی نے حافظ محمد سعید سے ملاقات کی اور بلوچستان میں دہشت گردی سمیت وطن عزیز پاکستان کو درپیش دیگر مسائل پر باہم تبادلہ خیال کیا۔ اس موقع پر مولانا امیر حمزہ،میر شمس کرد،مدنی بلوچ، میر نصیب اللہ شاہوانی، حافظ خالد ولید،قاری محمد یعقوب شیخ، حافظ محمد مسعود، مولانا ابو الہاشم،محمد یحییٰ مجاہدودیگر بھی موجود تھے۔ حافظ محمد سعید نے کہاکہ حکومت اور فوج بلوچستان میں ٹارگٹ کلنگ اور دہشت گردی میں ملوث عناصر کو گرفتا ر کرے لیکن آپریشن کا مجموعی تاثریہ نہیںہونا چاہیے کہ وہ بلوچ عوام کے خلاف ہے۔سپریم کورٹ بھی یہ بات کہہ چکی ہے اس پر عمل درآمد کی ضرورت ہے۔ تمام مذہبی و سیاسی جماعتوں کو متحد ہو کر بلوچستان کے مسئلہ پر بھرپور کردار ادا کرنا چاہیے۔انہوںنے کہاکہ وزیر داخلہ رحمن ملک نے بھارتی دورہ سے واپسی پر کہا تھا کہ میں نے انڈیا جا کر بلوچستان میں بھارتی مداخلت کے ثبوت انہیں پیش کئے ہیں۔ اگر وہ سچ کہتے ہیں کہ تو پھر قوم کو بتایا جائے کہ اس مداخلت کو بند کرنا کس کی ذمہ داری ہے؟ ٹارگٹ کلنگ اور دہشت گردی میں ملوث درندوں کو گرفتار کیوں نہیں کیا جاتا؟ صرف انڈیا کو شواہد دینا یا اس قسم کے بیانات دے دینا کافی نہیں۔ انہوں نے کہاکہ بلوچستان کا مسئلہ علاقائی نہیں قومی سطح پر اٹھایا جائے گا۔ بلوچستان کی موجودہ صورتحال پر ہمارے درمیان کوئی اختلافات نہیں۔ اسی صورتحال کو مدنظر رکھتے ہوئے ہم نے متفقہ طور پر فیصلہ کیا ہے کہ جلد قومی سطح کی آل پارٹیز کانفرنس کا انعقاد کیا جائے گااور اس میں بلوچستان کے مسئلہ پر جو متفقہ حل پیش کیا جائے گا وہ فوج اور حکومت کیلئے ایک زبردست قرارداد ہو گا۔ انہوںنے کہاکہ ہم سمجھتے ہیں کہ بلوچستان کا مسئلہ فی الفور حل کیا جائے اس میں تاخیر کی کوئی گنجائش نہیں ہے۔ حالات اس قدر خراب ہیں کہ مصنوعی طریقے اور ہتھکنڈے اختیار کر کے پریشانیوں سے نہیں بچا جا سکتا۔ حکمرانوں سمیت تمام اداروں کو مل کر اس حوالہ سے سنجیدہ کوششیں کرنی چاہئیں۔ انہوں نے کہاکہ جماعة الدعوة بلوچستان میں عوامی سطح پر ریلیف سرگرمیوں کی ایک بڑی مہم شروع کرے گی۔ جمہوری وطن پارٹی کے سربراہ طلال اکبر بگٹی نے گفتگو کرتے ہوئے کہاکہ بلوچستان کی عوام مصنوعی قیادت کو ہرگز قبول نہیں کرے گی۔ محب وطن جماعتیں گرینڈ جرگہ تشکیل دیں اسلام اور جمہوریت کے مفاد کیلئے بلوچستان کے مسئلہ پر اے پی سی جلد ہونی چاہئے جس میں بلوچستان کے بحران کا حل تشکیل دیا جائے۔ طلال اکبر بگٹی نے کہاکہ جماعةالدعوة کی طرح مسلم لیگ (ن) اور جماعت اسلامی نے بھی ہمیں بلوچستان کے مسائل کے حل کیلئے مکمل طور پر یقین دہانی کروائی ہے اور کہا ہے کہ وہ اسلام اور عوام دشمن مہروں کی حمایت نہیں کریں گے جس پر میں ان کا مشکور ہوں۔ انہوں نے کہاکہ میں اسلام آباد جارہا ہوں وہاں الیکشن کمشن سمیت دیگر اہم لوگوں سے بھی ملاقاتیں ہوں گی اور واپسی پر 14جنوری کے بعد اے پی سی میں مسئلہ بلوچستان کا حل تلاش کیا جائے گا تاکہ بیرونی سازشوں کو ناکام بنایا جاسکے۔