سندھ میں اربوں کی اراضی منظور نظر ارکان کو کوڑیوں کے مول بانٹ دی گئی


کراچی (آئی این پی) سندھ کی صوبائی حکومت نے اپنے 5 سالہ دور اقتدار میں زمینوں کی بندر بانٹ کے نئے ریکارڈ قائم کر دئیے‘ صوبائی حکومت نے اربوں روپے کی 14 ہزار ایکڑ قیمتی اراضی 507 منظور نظر ارکان کو کوڑیوں کے مول بانٹ دی۔ سندھ ریونیو بورڈ کی سپریم کورٹ کے احکامات پر پیش کردہ رپورٹ میں انکشاف کیا گیا ہے کہ صوبائی حکومت نے 507 افراد میں غیر زرعی بنیادوں پر زمینیں الاٹ کیں۔ سندھ لینڈ گرانٹ پالیسی کے تحت بانٹی جانے والی زمین کی قیمت ساڑھے 26 ارب روپے ہے لیکن لینڈ گرانٹ پالیسی کے تحت یہ زمین سوا 7 ارب روپے ریوڑیوں کی طرح بانٹ دی گئی۔ جن افراد میں یہ زمینیں بانٹی گئیں ان میں مشیر پٹرولیم ڈاکٹر عاصم، رکن قومی اسمبلی آفتاب شاہ جیلانی، صوبائی سیکرٹری عطاءمحمد، پروفیسر عبدالغفار، زاہدہ ستار، شاہد راشد، سندھ بلڈنگ کنٹرول اتھارٹی کے ڈی جی منظور قادر، اظہر فاروقی، حفنیل شاہ، سلمان قریشی، میجر احمد وسیم، حنیف پاریکھ، یونس ملک، امیر بخش بھٹو، نذیر بھڑگرئی، نواب جتوئی اور دیگر شامل ہیں۔ 11 ہزار 54 ایکڑ اراضی صرف 2012ءمیں الاٹ کی گئی۔