رکن پنجاب اسمبلی طارق شبیر نے خاندان سمیت پیپلز پارٹی چھوڑنے کا فیصلہ کر لیا


لاہور (شعیب الدین سے) لاہور سے مسلم لیگ (ن) کے امیدوار کو ہرانے والے پیپلز پارٹی کے دو ارکان اسمبلی میں سے ایک چودھری طارق شبیر اور ان کے خاندان نے پارٹی چھوڑنے کا فیصلہ کر لیا۔ نوائے وقت کے رابطہ کرنے پر طارق شبیر کے والد اور پارٹی سربراہ چودھری شبیر احمد میو کا کہنا تھا کہ 1967ءسے پارٹی کے کارکن ہیں۔ 1970، 1977ءاور 1988ءمیں رکن صوبائی اسمبلی رہے۔ اب ان کا بیٹا رکن قومی اسمبلی ہے مگر حالات یہ ہیں کہ پارٹی کے وزراءمدد کرنے کی بجائے الٹا پریشان کر رہے ہیں۔ چودھری شبیر احمد میو کا کہنا تھا کہ ان کے بیٹے کیلئے مسئلہ وزیر پانی و بجلی چودھری احمد مختار نے پیدا کیا۔ انہوں نے لیسکو کے سپرنٹنڈنگ انجینئر کے تبادلے کی درخواست بھی کی۔ چودھری احمد مختار نے پہلے ہامی بھری۔ اپنے بیٹے کی مداخلت پر ٹرانسفر کے احکامات واپس نہیں لئے۔ اس سوال پر کہ صرف ایک تبادلے پر وہ پارٹی سے ناراض ہو رہے ہیں، چودھری شبیر احمد میو نے کہا کہ یہ صرف ایک تبادلہ نہیں یہ ہماری بقا کا مسئلہ ہے۔ عوام کے کام ترجیح ہیں۔ وفاقی حکومت لاہور میں صرف لیسکو یا سوئی گیس کے کام کر سکتی ہے۔ اگر حلقے کے عوام کے یہ مسائل بھی حل نہ ہوئے تو اور کیا کام کروانے ہیں۔ طارق شبیر میو نے اس موقع پر کہا کہ والد کا حکم ہمیشہ مانا ہے، جو حکم دینگے عمل کرینگے۔