انتخابی اصلاحات: دیکھنا چاہتے ہیں ہدایت پر کتنا عملدرآمد کیا: سپریم کورٹ


اسلام آباد (نمائندہ نوائے وقت) سپریم کورٹ نے الیکشن اصلاحات (انتخابی قوانین میں تبدیلی) کیس پر عمل درآمد نہ کئے جانے کے خلاف دائر درخواست پر الیکشن کمشن سمیت دیگر فریقین کو نوٹس جاری کرتے ہوئے 15 جنوری تک جامع رپورٹ طلب کر لی جبکہ کہا گیا ہے کہ الیکشن کمشن عدالت کے فیصلے میں دی جانے والی ہدایات پر شق وار عمل درآمد پر ہونے والی پیشرفت پر مبنی رپورٹ پیش کرے۔ عدالت دیکھنا چاہتی ہے کہ اس کی ہدایت پر کس حد تک عمل درآمد کیا جا رہا ہے۔ چیف جسٹس کی سربراہی میں 3 رکنی بنچ نے کیس کی سماعت کی تو ورکرز پارٹی کے سربراہ عابد حسن منٹو پیش ہوئے اور عدالت کو بتایا کہ عدالتی فیصلے پر مکمل عمل درآمد نہیں ہوا۔ الیکشن کمشن کے نمائندے نے بتایا کہ عمل درآمد کیا جا رہا ہے، بیشتر شقوں پر عمل ہو چکا ہے جس کی مثال انتخابی ضابطہ اخلاق ہے۔ چیف جسٹس نے کہا کہ آپ نے حکومت کو انتخابی قوانین میں ترامیم کیلئے لکھنا تھا تو انہوں نے بتایا کہ حکومت کو لکھ دیا گیا ہے۔