بیک وقت 3 طلاق دینے والے مسلم شہری کو 3 برس قید‘ جرمانہ ہوگا اترپردیش میں مسودہ قانون منظور

لکھنو(آئی این پی) بھارت کی ریاست اتر پردیش کی حکومت نے طلاق ثلاثہ کا طریقہ کار ختم کرنے سے متعلق مرکز کے مسودہ قانون کو منظوری دیدی۔ اس طریقہ کار کے تحت ایک مسلم شخص اپنی بیوی کوبیک وقت 3مرتبہ طلاق دیتے ہوئے رشتہ ازدواج سے خارج کرسکتا ہے لیکن مسودہ قانون کے مطابق اب ایسا کرنے والے کسی بھی شوہر کو 3سال قید اور جرمانہ کا سامنا کرنا ہوگا۔ وزیر اعلی یوگی آدتیہ ناتھ کی صدارت میں کابینہ کے جلاس میں ریاستی حکومت نے مرکز کے اس مسودہ قانون کی رسمی منظوری دی۔ حکومت کے ترجمان سدھارتھ ناتھ سنگھ نے کہا کہ 3طلاق سے متعلق مرکز کے مسودہ قانون کو کابینہ نے منظور کرلیا ہے ۔ مرکز نے ریاستوں سے کہا تھا کہ وہ اس مسئلے پر 10دسمبر تک اپنے متعلقہ نظریات سے باخبر کریں۔
منظور



دیگر خبریں

پرنٹ لائن

پرنٹ لائن

15 دسمبر 2017
پرنٹ لائن

پرنٹ لائن

14 دسمبر 2017
پرنٹ لائن

پرنٹ لائن

13 دسمبر 2017
پرنٹ لائن

پرنٹ لائن

12 دسمبر 2017