لاہور: شہری لاکھوں کی نقدی، کاروں، موٹر سائیکلوں سے محروم، مزاحمت پر ایک زخمی

لاہور + کامونکے (سٹاف رپورٹر + نامہ نگار) ڈاکوﺅں اور چوروں نے شہریوں کو لاکھوں مالیت کی نقدی زیورات اور دیگر قیمتی اشیا سے محروم کر دیا جبکہ مزاحمت پر شہری کو گولی مار کر زخمی کردیا۔ ڈاکوﺅں نے تھانہ اچھرہ کے علاقہ میں نصیر اقبال سے 70ہزار مالیت کی نقدی و زیورات ، تھانہ گرین ٹاﺅن کے علاقہ میں عمر سے 60ہزار مالیت کی نقدی وزیورات ،تھانہ ٹاﺅن شپ کے علاقہ میں زاہد سے 10ہزار مالیت کی نقدی اور قیمتی سامان، تھانہ جنوبی چھاﺅنی کے علاقہ میں عظمت سے 40ہزار مالیت کی نقدی وزیورات، تھانہ ہنجروال کے علاقہ گوشہ احباب کے رہائشی یاسین کے 2لاکھ62ہزار کی نقدی زیورات لوٹ کر مزاحمت یاسین کے بیٹے وقار کو گولی مار کر شدید زخمی کردیا جبکہ تھانہ اقبال ٹاﺅن راوی بلاک میں نعمان فیصل کے گھر سے 90ہزار مالیت کی نقدی و قیمتی سامان ،تھانہ فیصل ٹاﺅن کے علاقہ میں سرفراز سے1 لاکھ60ہزار مالیت کی نقدی و زیورات ، تھانہ شاہدرہ کے علاقہ میں تنویر سے 40ہزار مالیت کی نقدی وزیورات لوٹ لیا گیا سمن آباد میں عمر،گلشن راوی میں فرحان کی گاڑیاں اور شادباغ میں عمران،لوئرمال میں زبیر،شاہدرہ میں ایاز اور یعقوب،شاہدرہ ٹاﺅن میں عثمان،گجر پو رہ میں نادر،سولا لائن میں عمر،باغبانپو رہ میں شہزاد،ہنجروال میں عمر،چوہنگ میں بلال،نواں کوٹ میں رضوان اور شالیمار میں عمار کی موٹرسائیکلیں چوری کر لیں گئیں۔ کامونکے سے نامہ نگار کے مطابق سادہ کپڑوں میں ملبوس پولیس ملازمین کی موٹر سائیکل سوار بہن بھائی سے ڈکیتی کی واردات سٹی پولیس کی موبائل گاڑی ملزمان کو چھڑوانے آئی تواہل محلہ باوردی ملازمین کو پھینٹی لگانے کے بعد کمرے میں بند کر دیا۔صدر بار ڈسٹرکٹ گوجرانوالہ نصراللہ گِل ، شیخ عنصر ایڈووکیٹ اور امیدوار سیکرٹری جنرل ڈسٹرکٹ بار گوجرانوالہ کی موجودگی میں ڈی ایس پی سرکل نے ذمہ دار پولیس ملازمین کے خلاف مقدمہ کے اندراج کا وعدہ کر کے ملازمین کو رہائی دلوائی۔ بتایا گیا ہے کہ ریلوے اسٹیشن کے نزدیکی محلہ کا حسنین ذوالفقار اپنی ہمشیرہ جوکہ یونیورسٹی کی طالبہ ہے موٹر سائیکل پر لیکر گھر آرہا تھا کہ لیڈی پارک روڈ پر ایک سرکاری موٹر سائیکل جس پر پولیس کی نمبر پلیٹ لگی ہوئی تھی سادہ کپڑوں میں سوار افراد نے انہیں روکنے کی کوشش کی اور طالبہ سے پرس چھیننا شروع کردیا۔ مزاحمت پر انہوں نے گن نکال لی اس دوران ریلوے پھاٹک پر لوگ دیکھ کر حسنین نے شور مچادیا۔ جس پر لوگوں نے دونوں افراد کو پکڑ کر پھینٹی لگائی اور ایک کمرے میں بند کر دیا۔ پولیس موبائل جس میں اے ایس آئی عباس، شاہداور سلطان نامی کانسٹیبل سوار تھے وہاں آگئے اور ملزمان کو چھڑوانے کی کوشش کی۔ محلہ داروں نے انہیں پکڑ لیا اور بدتمیزی پر اے ایس آئی محمد عباس اور دیگر ملازمین کو پھینٹی لگا کر ا±سی کمرے میں بند کر دیا۔ حسنین کے کزن عاطف سہیل ایڈووکیٹ نے ڈسٹرکٹ بار گوجرانوالہ کے صدر نصراللہ گِل اور شیخ عنصر ایڈووکیٹ کو فون کر دیا۔ اطلاع ملنے پر ڈی ایس پی سرکل رانا عطاالرحمن اور ایس ایچ او سٹی بھی وہاں پہنچ گئے۔ ڈی ایس پی نے صدر بار کی موجودگی میں تمام ملازمین کو معطل کرنے اور ان کے خلاف مقدمہ درج کرنے کا وعدہ کر کے ملازمین کو رہائی دلوائی۔ پولیس ذرائع کے مطابق چاروں ملازمین کو معطل کر دیا گیا ہے۔ شہریوں کا کہنا ہے کہ لیڈی پارک روڈ پر ہونے والی تمام وارداتوں کی تفتیش ان ملازمین سے کی جائے۔ صدر ڈسٹرکٹ بار گوجرانوالہ کا کہنا کہ اگر پولیس نے ذمہ دار ملازمین کے خلاف سخت ایکشن نہ لیا تو پھر معاملے کو اعلیٰ سطح پر لے جائیں گے۔
پولیس ملازمین / پٹائی



دیگر خبریں

پرنٹ لائن

پرنٹ لائن

16 دسمبر 2017
پرنٹ لائن

پرنٹ لائن

15 دسمبر 2017
پرنٹ لائن

پرنٹ لائن

14 دسمبر 2017
پرنٹ لائن

پرنٹ لائن

13 دسمبر 2017