فضل الرحمن لاہور پہنچ گئے‘ مجلس عاملہ آج ٹرمپ کے اعلان پر لائحہ عمل طے کریگی

لاہور( خصوصی نامہ نگار) جے یو آئی کے مرکزی امیر مولانا فضل الرحمن تین روزہ دورے پر گزشتہ روز لا ہور پہنچ گئے وہ یہاں پارٹی اجلاس میں شرکت کے علاوہ مختلف پروگراموں سے خطاب بھی کریں گے۔ جے یو آئی کی مر کزی مجلس عاملہ اور صوبائی امراءو نظماءکا مشترکہ اہم اجلاس آج بروز جمعہ کو مولانا فضل الرحمن کی صدارت میں مر کزی ہیڈ آفس جامعہ مدنیہ لاہور میں ہوگا، جے یو آئی کے مرکزی سیکرٹری جنرل مولانا عبد الغفور حیدری اجلاس کو ایجنڈے سے بریف کریں گے۔ مولانا محمد امجد خان نے کہا اجلاس میں ملکی اور بین الاقوامی صورتحال اور متحد مجلس عمل کے حوالے سے اب تک ہونے والی پیش رفت پرغور اور اس حوالے سے اہم فیصلے کئے جائیں گے۔ انہوں نے کہا اجلاس میں آئندہ عام انتخابات کے حوالے سے حکمت عملی طے کی جائے گی۔ انہوں نے مزید بتایا مولانا فضل الرحمن کل ایوان اقبال میں قومی سیرت النبی کانفرنس اور پرسوں شیخوپورہ میں اسلام و امن سیمینار سے خطاب کریں گے۔ دریں اثناءمولانا عبد الغفور حیدری نے لاہور پہنچنے پر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا دینی جماعتوں کا اتحاد جلد قائم ہونے والا ہے، بحرانوں سے بچنے کا واحد راستہ اسلامی نظام کا نفاذ ہے اسی مقصد کے لئے قوم کو دیندار قیادت کو ووٹ دینا ہو گا۔ انہوں نے کہاکہ قوم کی نظریں اب دیندار قیادت پر ہیں کیونکہ وہی ملک کو بحرانوں کو سے آ زاد کراسکتی ہے۔اسلام ہی اس ملک کا مقدر اور ملک کوسیکولر بنانے کی کوئی سازش کامیاب نہیں ہوسکتی ہے ۔ صباح نیوزکے مطابق جے یو آئی (ف) کی مر کزی مجلس عاملہ کا اجلاس آج مولانا فضل الرحمن کی صدارت میں ہوگا ، امریکی صدرٹرمپ کے مقبوضہ بیت المقدس کو اسرائیلی دارالحکومت تسلیم کرنے کے خلاف دینی جماعتوں کے مشترکہ لائحہ عمل پر غورکیا جائے گا اور دینی اتحاد کے حوالے سے صورتحال کا جائزہ لیا جائے گا، یاد رہے جمعیت علماءاسلام (س) کے سربراہ مولانا سمیع الحق نے دینی جماعتوں کے اتحاد میں شامل ہونے کی بجائے تحریک انصاف سے انتخابی اتحاد کا باقاعدہ اعلان کردیا اس اعلان سے ممکنہ صورتحال کا جے یو آئی (ف) کی مر کزی مجلس عاملہ جائزہ لے گی اور اس حوالے سے بھی حکمت عملی کا اعلان کیا جائے گا جے یو آئی (ف) نے واضح کیا ہے پاکستان کو سیکولر بنانے کی کسی سازش کو کامیاب نہیں ہونے دیا جائے گا ۔
فضل الرحمن